روہنگیا پناہ گزینوں کو ملک بدر کرنے کے معاملہ پر سپریم کورٹ ہی کوئی فیصلہ کرے گی : راجناتھ سنگھ

نئی دہلی:مرکزی وزیر داحلہ راجناتھ سنگھ نے کہا ہے کہ روہنگیا مسلمانوں کو ،جو ہندوستان مٰن غیر قانونی طور پر داخل ہوئے ہیں،ملک بدر کرنے کے مرکزی حکومت کے منصوبوں پر سپریم کورٹ کوئی فیصلہ کرے گی ۔ روہنگیا پناہ گزینوں کے معاملے میں مرکزی حکومت آج سپریم کورٹ میں 15 صفحات کا حلف نامہ داخل کیا ہے جس میں روہنگیا پناہ گزینوں کے ملک میں آنے اور رہنے کو سلامتی کے لئے سنگین خطرہ قرار دیا گیا ہے۔ حلف نامہ داخل کئے جانے کے بعد راجناتھ سنگھ نے صحافیوں کے ساتھ بات چیت میں کہا کہ روہنگیا معاملے کے حوالے سے جو بھی فیصلہ کرنا وہ عدالت کو کرنا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ میری رائے یہ ہے کہ ہمیں عدالت کے فیصلے کا انتظار کرنا چاہئے ۔ عدالت عظمیٰ میں اس معاملے پر اب آئندہ سماعت 3 اکتوبر کو ہوگی۔
وزیر داخلہ کرین رججیو نے روہنگیا پناہ گزینوں کے مسئلے پر بین الاقوامی انسانی حقوق کے اداروں کو مخاطب کرکے کہا کہ عالمی تنظیموں کو ہندوستان کے بارے میں غلط معلومات نہیں پھیلانی چاہئے۔ انہوں نے کہاکہ بین الاقوامی انسانی حقوق کے اداروں سے میری درخواست ہے کہ وہ ہندوستان اور حکومت ہند کے بارے میں کوئی غلطی فہمی نہ پھیلائیں ۔ مسٹر کرن رجیجو نے کہا کہ ملک کی سلامتی ہماری ذمہ داری ہے۔ انہوں نے روہنگیا پناہ گزینوں کو واپس بھیجنے کے بارے میں کہا کہ ان کا جانا ملک کے مفاد کا معاملہ ہے۔ انہوں نے اس مسئلہ کو ”حساس“قرار دیتے ہوئے کہا کہ حکومت جو بھی فیصلہ کرے گی وہ ملک کے مفاد میں ہی کرے گی۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Supreme court to take a call on rohingyasrajnath singh in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply