سپریم کورٹ نے آدھار قانون کو چیلنج کرنے والی درخواستوں پر حکومت سے جواب طلب کر لیا

نئی دہلی: سپریم کورٹ آف انڈیا نے آدھار کے 12عددی شناختی نمبر کو بینک کھاتوں اور موبائیل نمبروں سے منسلک کرنے کے حوالے سے آدھار قانون کے آئینی جواز کو چیلنج کرنے والی چار عذر داریوں پر مرکزی حکومت سے جواب طلب کر لیا۔
عدالت عظمیٰ نے یہ کہتے ہوئے کوئی عبوری حکم جاری کرنے سے انکار کر دیا کہ آدھار سے متعلق تمام معاملات کی حتمی سماعت ماہ رواں کے آخری ہفتہ میں ایک دوسری بنچ شروع کرے گی نیز مرکز اس کی مہلت میں پہلے ہی31دسمبر تک توسیع کر چکا ہے۔
تاہم جسٹس اے کے سیکری اور جسٹس اشوک بھوشن پر مشتمل دو ججی بنچ نے کہا کہ بینک اور ٹیلی کوم سروس بہم پہنچانے والے صارفین کو پیغام بھیج کر بینک کھاتوں اور موبائیل نمبروں کو آدھار سے منسلک کرنے کی حتمی تاریخ سے مطلع کرنا چاہئے ۔جس میں بتایا جائے کہ بینک کھاتوں کے لیے31دسمبر 2017اور موبائیل نمبروں کے لیے 6فروری2018حتمی تاریخ ہے۔

Title: supreme court seeks centres reply on pleas challenging aadhaar act | In Category: ہندوستان  ( india )

Leave a Reply