اناؤ ریپ کیس: سپریم کورٹ نے پانچوں معاملات دہلی منتقل کر دیے،متاثرہ کو25لاکھ روپے معاوضہ

نئی دہلی: اناؤ جنسی زیادتی کیس میں نہایت سخت رویہ اختیار کرتے ہوئے سپریم کورٹ آف انڈیا نے اس کیس کے حوالے سے پانچوں معاملات ریاست اترپردیش سے دہلی منتقل کر دیے جہاں پانچوں معاملات کی یومیہ سماعت ہو گی۔

سپریم کورٹ نے ریاست کی یوگی حکومت کو یہ حکم بھی دیا کہ وہ کل جمعہ تک متاثرہ بچی کو 25لاکھ روپے معاوضہ دے۔

عصمت دری کی شکار یہ کمسن بچی اپنے وکیل کے ساتھ ایک کار حادثہ میں زخمی ہوکر اترپردیش کے دارالخلافہ لکھنؤکے ایک اسپتال میں زیر علاج ہے جہاں اسے مصنوعی سانس دلائی جارہی ہے اس کی حالت نازک بتائی جاتی ہے۔

سپریم کورٹ نے مرکزی تحقیقاتی بیورو (سی بی آئی ) کو یہ حکم بھی دیا کہ وہ کار حادثہ کی تحقیقات سات روز میں اور ریپ کیس کی45روز کے اندر تفتیش مکمل ہوجانی چاہئے۔

متاثرہ اور اس کے وکیل کی حفاظت کی ذمہ داری سینٹرل ریزرو پولس فورس (سی آر پی ایف) کو سونپی گئی ہے ۔

ان کی کار کو اتوار کے روز ایک ٹرک نے زوردار ٹکر ماری تھی۔ اس ٹرک کی نمبر پلیٹ پرنمبر چھپانے کے لیے کالک پوت دی گئی تھی۔لیکن ٹرک ڈرائیور اور اس کے مالک کو گرفتار کر لیا گیا۔

جس وقت اس ٹرک نے کار کو ٹکر ماری تو کار میں متاثرہ ، اس کی دو ماسیاں اور وکیل تھا۔ دریں اثنا اس کیس میں ملوث چار بار کے بی جے پی ایم ایل اے کلدیپ سنگھ سینگر کو بی جے پی نے پارٹی سے نکال دیا۔

سینگر کے علاوہ بھائی اتل سینگر اور ساتھیوں پر اناؤ کی اس کمسن بچی سے اجتماعی جنسی زیادتی کرنے کا الزام ہے۔اس لڑکی کو اناؤ کے مانکھی گاؤں سے11جون 2017کو اغوا کیا گیا تھا۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Supreme court of india transfers all 5 cases linked to unnao teen out of up to delhi in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News
What do you think? Write Your Comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.