سپریم کورٹ نے کلکتہ ہائی کورٹ کے جج کرنان کے خلاف وارنٹ جاری کیا

نئی دہلی: سپریم کورٹ نے حکم کے باوجود عدالت میں پیش نہ ہو نے والے کلکتہ ہائی کورٹ کے جج سی ایس کرنان کے خلاف ضمانتی وارنٹ جاری کیا ہے۔ انہیں ہتک عزت کے کیس میں عدالت میں پیش ہونا تھا۔ عدالت نے پہلے بھی انہیں حاضر ہونے کی ہدایت دی تھی مگر انہوں نے حکم نہیں مانا تھا۔ جس پر چیف جسٹس جگدیش سنگھ کیہر کی صدارت والی سات ججوں پر مشتمل آئینی بنچ نے معاملہ کو توہین عدالت قرار دے کر جسٹس کرنان کے خلاف ضمانتی وارنٹ جاری کر دیا اور انہیں 10 ہزار روپے کے ذاتی مچلکہ داخل کرنے کو بھی کہا گیا ہے۔
عدالت نے ریاست کے پولس ڈائریکٹر جنرل کو ہدایت کی کہ جسٹس کرنان کے گھر جاکر انہیں وارنٹ تھمائیں۔ سپریم کورٹ نے جسٹس کرنان کی کیس میں ذاتی سماعت کی درخواست بھی مسترد کردی ہے۔ دراصل جسٹس کرنان نے مبینہ طور سے کئی خط لکھ کر مختلف ججوں پر تہمتیں لگائی تھیں۔ عدالت عظمیٰ نے فروری میں ہدایت دی تھی کہ جب تک یہ معاملہ التوا میں ہے۔
جسٹس کرنان عدالتی یا انتظامی فرائض انجام نہیں دیں گے۔ عدالت نے یہ بھی واضح کیا تھا کہ جسٹس کرنان اپنے عدالتی اور انتظامی فرائض کے تعلق سے تمام فائلیں ہائی کورٹ کے رجسٹرار جنرل کے سپرد کردیں۔ سپریم کورٹ سے وارنٹ جاری ہوتے ہی جسٹس کرنا ن نے ایک پریس کانفرنس بلائی اور سپریم کورٹ کے ساتھ ججوں پر مقدمہ چلانے کی دھمکی دی۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Supreme court issues bailable warrant against calcutta high court judge c s karnan in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply