کشمیر میں پتھراؤ کرنے والے دہشت گرد نہیں گمراہ نوجوان ہیں: بی جے پی

نئی دہلی:(یو این آئی)بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے کہا ہے کہ ملک میں سرگرم نکسلی اور وادی کشمیر میں سنگ باری کرنے والے نوجوان بیرونی دہشت گرد نہیں بلکہ ملک کے کچھ بھٹکے ہوئے لوگ ہیں اور اس مسئلہ کے حل کے لئے ایک منصوبہ تیار کیا گیا ہے۔ بی جے پی کے جنرل سکریٹری کیلاش وجے ورگیہ نے یہاں نامہ نگاروں سے کہا کہ سکما مسئلہ دہشت گردی کا مسئلہ نہیں ہے۔ نکسلزم اور دہشت گردی کو ایک نظر سے نہیں دیکھا جا سکتا ہے۔ سکما کے نکسلی اور وادی کشمیر میں پتھر بازی کرنے والے نوجوان ہمارے ملک کے بھٹکے ہوئے لوگ ہیں۔ ان کے ساتھ وہ سلوک نہیں کیا جا سکتا ہے جو باہر سے گھسے دہشت گردوں کے ساتھ ہوتا ہے۔
مسٹر وجے ورگیہ نے کہا کہ مرکزی حکومت ان مسائل پر بہت سنجیدہ ہے۔ وزیر اعظم، وزیر داخلہ کا اس سلسلے میں شدید غور و خوض ہوا ہے۔ دونوں رہنماؤں کی جموں کشمیر کی وزیر اعلی محبوبہ مفتی سے بھی بات چیت ہوئی ہے۔ حکومت نے کچھ منصوبہ بنایا ہے جسے جلد ہی عمل میں لایاجائے گا۔ اس کے لیے وقت کا انتظار کرنا پڑے گا۔ پاکستانی فوجیوں کے ذریعہ ہندستانی علاقے کے اندر گھات لگا کر دو ہندستانی جوانوں کا قتل اور ان کے جسم کو مسخ کئے جانے کے واقعہ کے بارے میں انہوں نے کہا کہ حکومت نے اس مسئلے کو سنجیدگی سے لیا ہے اور سیکورٹی فورسز کی طرف اس کا معقول جواب دیا جائے گا۔

Title: stone throwing kashmiri youths are not terrorists saysbjp | In Category: ہندوستان  ( india )

Leave a Reply