جموں و کشمیر سے افسپا ہٹانے کے لیے سابق وزیر داخلہ چدمبرم کی تجویز کی حمایت

نئی دہلی:جموں و کشمیر کو خود مختاری دینے اور وہاں سے مسلح فورس خصوصی اختیار ایکٹ (افسپا) سے ہٹانے کے معاملے پر سینئر کانگریس لیڈر سیف الدین سوز نے سابق وزیر داخلہ پی چدمبرم کی حمایت کرتے ہوئے کہا کہ لوگوں کو مسٹر چدمبرم کی بات ضرور سننی چاہئے۔
مسٹر چدمبرم نے حال ہی میں دیئے گئے ایک انٹرویو میں کہا تھا کہ ہندستان کو یہ یقینی بنانا چاہئے کہ کشمیر کے لوگوں کو وہ سب ملے جس کا وعدہ ان سے ملک کے انضمام کے وقت کیا گیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر کے ساتھ کئے گئے اپنے وعدے کو توڑنے کی ملک کو بڑی قیمت چکانی پڑی ہے اور یہ سارے مسائل اسی وجہ سے پیدا ہوئے ہیں کیونکہ کشمیر کو زمین کے معاملے کے طور پر دیکھا گیا ہے، وہاں کے لوگوں کے مسئلے کے طور پر نہیں۔ انہوں نے کہا تھا کہ وہ اپنے دور میں کشمیر سے افسپا ہٹانا چاہتے تھے لیکن دفاعی اداروں اور سیاسی قیادت نے ان کا ساتھ نہیں دیا۔
کشمیر کی کانگریس یونٹ کے سابق صدر اور سابق مرکزی وزیر مسٹر سوز نے کہا کہ کشمیر کا مسئلہ سیاسی ہے اور اس کا حل بھی سیاسی ہی ہونا چاہئے۔اسی وجہ سے مسٹر چدمبرم جو کہہ رہے ہیں، اس پر توجہ دی جائے۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت نے کشمیر کی خود مختاری کو ختم کر کے غلط کیا۔مسٹر چدمبرم نے اس بارے میں جو کہا اسے سنجیدگی سے لینا چاہیے۔
انہوں نے کشمیر کی تازہ صورت حال سے نمٹنے کے طریقوں پرتنقید کرتے ہوئے کہا کہ سکیورٹی فورسز نے وہاں مناسب طریقہ کار پر عمل نہیں کیا اور ریاست میں افسپا کا غلط استعمال کیا گیا ہے۔ مسٹر سوز نے کہا کہ کشمیر میں امن بحالی کے لئے ٹھوس فیصلے کرنے کی سمت میں مسٹر چدمبرم کا بے باک بیان کشمیری عوام کے ساتھ براہ راست بات چیت شروع کرنے میں مدد کر سکتا ہے۔
انہوں نے مزید کہا کہ انہوں نے جسٹس صغیر کمیٹی کے سامنے بھی کشمیر کی خود مختاری کا مسئلہ اٹھایا تھا۔ دوسری جانب بی جے پی نے کشمیر کے مسئلے پر مسٹر چدمبرم کے بیان کا یہ کہہ کر مذاق اڑا یاکہ وہ سستی سیاست کر رہے ہیں اور اس سے قومی سلامتی کو خطرہ ہوگا۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Soz meets chidambaram congratulates him for his forthrightness in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply