کچھ جماعتوں اور تنظیموں نے جدو جد آزادی میں کوئی حصہ نہیں لیا بلکہ ہندوستان چھوڑو تحریک کی مخالفت کی:سونیاگاندھی

نئی دہلی:کانگریس صدر سونیا گاندھی نے کسی سیاسی پارٹی یا تنظیم کا نام لیے بغیر الزام لگایا کہ آزادی کی لڑائی کے دوران “کچھ ایسی تنظیمیں بھی تھیں جن کی اس جدوجہد میں کوئی شراکت نہیں تھی۔ یہی نہیں بلکہ ان تنظیموں اور جماعتوں نے تو بھارت چھوڑو تحریک کی مخالفت بھی کی ۔ سونیا گاندھی کا اشارہ وی ڈی ساورکر کی جانب تھا جن کی بی جے پی مداح ہے اور انہوں نے 1942میں گاندھی جی کی بھارت چھوڑو تحریک کی مخالفت کی تھی۔ سونیا نے مزید کہا کہ آج ملک میں غیر قانونی قوتوں کاغلبہ نظر آرہا ہے۔
محترمہ گاندھی نے لوک سبھا میں بھارت چھوڑو تحریک کی 75 ویں سالگرہ پر خصوصی بحث کے دوران آج سوال کیا کہ کیا منفی قوتیں پھر تیزی سے نہیں ابھر رہی ہیں؟ آزادی کی جگہ خوف نہیں پھیل رہا؟ “انہوں نے کہا کہ ایسا لگتا ہے کہ ملک پر نفرت اور تقسیم کے سیاسی بادل دوبارہ چھانے لگے ہیں۔ سنہ 1942 کی تحریک کو یاد کرتے ہوئے کانگریس صدر نے کہا کہ بھارت چھوڑو تحریک انقلابی تبدیلی کی مثال بن گئی ہے۔ کسی تنظیم کا نام لیے بغیر انہوں نے کہا “وہیں، کچھ ایسی تنظیم بھی تھیں جن کا آزادی کی لڑائی میں کوئی اہم کردار نہیں تھا۔”
اس پر بھارتیہ جنتا پارٹی اور این ڈی اے کے دیگر اتحادیوں کے ارکان نے ہلکا اعتراض بھی کیا۔ محترمہ گاندھی نے کہا “موجودہ حالات کے بارے میں کہا کہ خیالات کے اختلافات اور بحث کی گنجائش کم ہو گئی ہے۔ قانون کے راج پر بھی غیر قانونی قوتوں کا غلبہ نظرآرہا۔اگر آزادی کو محفوظ رکھنا ہے تو ہر جابرانہ طاقت کے خلاف مقابلہ کرنا ہوگا۔ “

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Sonia gandhis jab at bjp in lok sabha some opposed quit india movement in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply