سونیا گاندھی نے حزب اختلاف رہنماؤں کو لنچ پر مدعو کیا،کیجری وال کو دعوت نہیں دی

نئی دہلی:صدر جمہوریہ کے انتخاب کے دن جوں جوں قریب آتے جا رہے ہیں حکمراں اور حزب اختلاف نے تانے بانے بننے شروع کر دیے ۔اس ضمن میں کانگریس صدر سونیا گاندھی نے مغربی بنگال کی وزیر اعلیٰ و ترنمول کانگریس سربراہ ممتا بنرجی اور بہار کے وزیر اعلیٰ اور جنتا دل یونائیٹڈ (جے ڈی یو ) سربراہ نتیش کمار سے بالمشافہ ملاقات کے بعدجمعرات کو حزب اختلاف کی جماعتوں کے اہم رہنماؤں کو جمعہ کے روزلنچ پر مدعو کیا ہے جس میں صدر کے لئے اپوزیشن کے مشترکہ امیدوار کے بارے میں تبادلہ خیال کیا جائے گا۔ لیکن عام آدمی پارٹی کے سربراہ اور دہلی کے وزیر اعلیٰ اروند کیجری وال کو انہوں نے لنچ کی دعوت نہیں دی۔
کانگریس ذرائع نے بتایا کہ محترمہ گاندھی نے مارکسی کمیونسٹ پارٹی، ترنمول کانگریس، بہوجن سماج پارٹی، راشٹریہ جنتا دل، سماج وادی پارٹی، دراوڑ منیتر کزگم اور کچھ دیگر جماعتوں کے لیڈروں کو ذاتی طور پر فون کرکے دعوت دی ہے۔ میٹنگ میں مغربی بنگال کی وزیر اعلیٰ اور ترنمول کانگریس کی لیڈر ممتا بنرجی، راشٹریہ جنتا دل کے رہنما لالو پرساد یادو، مارکسی کمیونسٹ پارٹی کے لیڈر سیتا رام یچوری کے شامل ہونے کی امید ہے۔ صدر پرنب مکھرجی کو دوبارہ صدر بنانے کا مشورہ دینے والے بہار کے وزیر اعلیٰ نتیش کمار اس میں شریک نہیں ہوں گے۔ مسٹر کمار کی جگہ جنتادل یو کے سینئر لیڈر شرد یادو حصہ لیں گے۔
مسٹر مکھرجی کی مدت کار جولائی میں ختم ہو رہی ہے۔ صدارتی امیدوار کے لئے محترمہ گاندھی اپوزیشن جماعتوں کے لیڈروں سے فون پر اور انفرادی طور پر بات چیت کر رہی ہیں۔ مسٹر نتیش کمار اور محترمہ ممتا بنرجی اس سلسلے میں محترمہ گاندھی سے ملاقات کر چکے ہیں۔ اپوزیشن جماعتوں کی کوشش ہے کہ صدر کے لئے مشترکہ امیدوار اتار کر بی جے پی کی قیادت والے قومی جمہوری اتحاد کو سخت ٹکر دی جائے۔ بی جے پی نے صدارتی امیدوار کے تعلق سے اپنے پتے نہیں کھولے ہیں۔

Title: sonia gandhi invites opposition leaders for lunch | In Category: ہندوستان  ( india )

Leave a Reply