سپریم کورٹ نے نوجوت سنگھ سدھو کو روڈ ریج کیس میں بری کر دیا

نئی دہلی:سڑک پر طیش میں آکر ایک شخص کےغیر ارادی قتل کے 30سال پرانے مقدمہ میں سپریم کورٹ نے کرکٹر سے سیاستداں بننے والے پنجا ب کے وزیر سیاحت نوجوت سنگھ کو بری کر دیا لیکن اسی کیس میں تعزیرات ہند کی دفعہ323(دیدہ دانستہ کسی کو چوٹ پہنچانا)کے معاملہ میں انہیں مجرم قرار دے کر1000روپے جرمانہ کی سزا سنائی۔

جسٹس جے چیلامیشور اور جسٹس سنجے کشن پر مشتمل دو ججی بنچ نے کہا کہ تعزیرات ہند کی دفعہ323کے تحت نوجوت سنگھ سدھو کو مجرم قرار دیا جاتا ہے ۔انہیں کوئی سزا نہیں دی جارہی لیکن ان پر ایک ہزار روپے کا جرمانہ عائد کیا جاتا ہے اور شریک ملزم روپیندر سنگھ سندھو کو اس معاملہ میں بری کیا جاتا ہے۔

واضح ہو کہ سدھو اور سندھو پر الزام تھا کہ ان دونوں نے سڑک پر ایک شخص زدوکوب کیا تھا جس کے بعد اس شخص کی اسپتال میں موت ہو گئی تھی۔سپریم کورٹ نے پنجاب اور ہریانہ ہائی کورٹ کے اس فیصلہ کوبھی کالعدم قرار دے دیا جس میں ان دونوں کو غیر ارادی قتل کا مجرم قرار دے کر تین سال کی سزا سنائی گئی تھی۔سپریم کورٹ نے18اپریل کو سماعت مکمل کر کے فیصلہ محفوظ کر لیا تھا۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Sidhu not guilty of culpable homicide in road rage case in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News
What do you think? Write Your Comment