سپریم کورٹ نے شوپیان فائرنگ معاملہ میں میجرکے خلاف درج ایف آئی آر خارج کرنے عرضی پر سماعت کرنا منظور کرلیا

نئی دہلی:سپریم کورٹ نے ایک فوجی افسر کی اس عرضی پر سماعت کرنا منظور کر لیا جس میں اس نے شوپیان میں ہوئی حالیہ فائرنگ میں انکے بیٹے کے خلاف،جو فوج میں میجر ہے، جموں و کشمیر پولس کے ذریعہ درج کی گئی ایف آئی آرکو خارج کرنے کی استدعا کی گئی ہے۔
چیف جسٹس دیپک مشرا کی سربراہی میںجسٹس اے ایم کھانویلکر اور جسٹس ڈی وائی چندر چوڑ پرمشتمل تین ججی بنچ نے مدعی کے وکیل ایشوریہ بھٹ کیاس دلیل کو تسلیم کر تے ہوئے کہ فوجی افسر کے باپ کی درخواست فوری بنیاد پر سماعت کی متقاضی ہے پیر کےروز سماعت کرنا منظور کر لیا۔وکیل نے کہاکہ شوپیان کے فائرنگ واقعہ کے حوالے سے میجر ادتیہ کمار کے خلاف غیر قانونی طور پر ایف آئی آر درج کی گئی ہے۔
لیفٹننٹ کرنل کرم ویر سنگھ نے کہاکہ ان کے بیٹے ادتیہ کما ر کو ، جو 10گڑھوال رائفلزمیں میجر کے عہدے پرہے، ایف آئی آر میں غلط، منمانے ڈھنگ سے اور زبردستی نامزد کیا گیا ہے۔
کیونکہ یہ واقعہ فوجی قافلہ سے تعلق رکھتا ہے جو افسپا کے تحت شوپیان کے گانو پورہ گاؤں میں باقاعدہ فوجی ڈیوٹی پر تھا۔ اور یہ قافلہ پتھر مارنے والے بے قابو ہجوم میں گھر گیاتھا اور پتھراؤ سے فوجی گاڑیوں کو نقصان پہنچ رہا تھا۔جب فوجیوںنے پتھراؤکرنے والوںپرفائرنگ کی تو تین عام شہری مارے گئے۔جس پر ریاستی وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے واقعہ کی تحقیقات کاحکم دے دیا۔

Title: shopian firing sc agrees to hear majors father plea for quashing fir | In Category: ہندوستان  ( india )

Leave a Reply