طارق انور کے بعد این سی پی جنرل سکریٹری مناف حکیم بھی پارٹی کی بنیادی رکنیت سے مستعفی

ممبئی: نیشنل کانگریس پارٹی (این سی پی) کے سربراہ شرد پوار کو رافیل معاہدے پر وزیر اعظم نریندر مودی کے حق میں بیان دینا ان کی پارٹی کے لیے کافی مہنگا ثابت ہوتا دکھائی دے رہا ہے کیونکہ بہارکے قد آور لیڈر طارق انور کے بعد این سی پی کے جنرل سکریٹری اور مہاراشٹر اقلیتی کمیشن کے سابق چیرمین مناف حکیم نے بھی پارٹی کی بنیادی رکنیت سے استعفیٰ دینے کا اعلان کر دیا۔

انہون نے کہا کہ رفافیل جنگی طیاروں کی خرید کے حوالے سے کیے گئے معاہدے پر شرد پوار کے ذریعہ مودی کی حمایت کرنے کے بعد انہیں اپنی ساکھ بچانا مشکل ہو رہی ہے۔واضح ہو کہ بدھ کے روز پوار نے ایک ٹنیوز چینل سے بات کرتے ہوئے کہا تھا کہ رافیل معاہدے کی میں وزایر اعظم کی نیت پر عوام کو کوئی شبہ نہیں ہے۔

مناف نے کہا کہ وہ اپنے ایک اور پارٹی رفیق ،لوک سبھا رکن طارق انور کے نقش قدم چلتے ہوئے پارٹی سے مستعفی ہو رہے ہیں اور مزید این سی پی کارکن مستعفی ہو سکتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ شرد پوار نے بنیاد پرست طاقتوں کی مکبھی حمایت نہیں کی ۔پھر وہ کیسے یہ کہہ سکتے ہیں کہ نریندر مودی رافیل کیس میں عوام کی نظروں میں قصور وار نہیں ہیں؟ جبکہ اس کی تحقیقات کے لیے ایک مشترکہ پارلیمانی کمیٹی بھی تشکیل نہیں دی گئی۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Sharad pawar loses another top party leader for defending modi in rafale dea in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply