کشمیری علیحدگی پسندوں اور جنگجوؤں میں کوئی فرق نہیں: وزیر مملکت داخلہ ہنسراج اہیر

نئی دہلی : مرکزی وزیرمملکت برائے داخلہ ہنسرج اہیر نے ملک مخالف سرگرمیاں کرنے والوں کے خلاف سخت کارروائی کئے جانے کی حمایت کرتے ہوئے کہا کہ ان کی نظر میں علیحدگی پسندوں اور جنگجوؤں میں کوئی فرق نہیں ہے۔
مسٹر اہیرنے آج یہاں ایک پرائیویٹ چینل سے انٹرویو میں کشمیر میں علیحدگی پسندوں کے خلاف مرکز کی جانب سے کچھ سخت کارروائی کا اشارہ دیتے ہوئے کہا “وقت آ گیا ہے کہ حکومت ان علیحدگی پسندوں کے خلاف کارروائی کرے کیونکہ ملک میں یہ لوگ پاکستان کے ایجنڈہ کو پھیلارہے ہیں اور پاکستان حامی نعرے لگاتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ وہ لوگ ہیں جو ایک طرف تو سرکاری خرچے پر نہایت اہم لوگوں کو دی جانے والی سہولیات لے رہے ہیں اور وہیں دوسری طرف وادی کشمیر میں بدامنی پھیلا رہے ہیں، سلامتی دستوں پر حملے کرا رہے ہیں اور بچوں کو سکیورٹی اہلکاروں پر پتھراؤ کے لئے اکسا رہے ہیں۔ ایسے لوگوں کے خلاف فوجداری معاملے درج ہونے سے انکار نہیں کیا جا سکتا۔
.مسٹر اہیر کا یہ بیان ایسے وقت آیا ہے جب علیحدگی پسندوں کو وادی کشمیر میں بدامنی کے لئے ذمہ دار مانتے ہوئے مرکز انہیں دی گئی تمام سہولیات واپس لینے پر غور کر رہا ہے۔ ذرائع کے مطابق مرکز نے کشمیر میں علیحدگی پسند لیڈروں کو ہر طرح کی سہولیات دے رکھی ہیں جس میں ان کی حفاظت کے لئے پولیس فورس کی تعیناتی، سفر اور طبی سہولیات اور مفت ہوائی ٹکٹ وغیرہ شامل ہیں۔ وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ کی قیادت میں کل کشمیر گئے ایک کل جماعتی وفد نے علیحدگی پسند لیڈروں سے بات چیت کی کوشش کی تھی لیکن انہوں نے اس سے انکار کر دیا۔
ان کے اس رویہ کو دیکھتے ہوئے ایسا سمجھا جا رہا ہے کہ مرکز ان کے خلاف کچھ سخت قدم اٹھا سکتا ہے۔ تاہم مسٹر سنگھ نے واضح طور پر ایسی کوئی بات نہیں کہی ہے۔ اس درمیان داخلہ کے وزیرمملکت کرن ریجیجو نے بھی کہا کہ حکومت کشمیر مسئلے پر جو بھی فیصلہ کرے گی وہ قوم کے مفاد میں ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ چاہے کشمیر ہو یا پھر ملک کا کوئی دوسرا حصہ جو کوئی بھی ملک مخالف سرگرمیوں میں ملوث پایا جائے گا اس کے خلاف سخت کارروائی ہوگی۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Separatists now speaking the language of extremists hansraj ahir in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply