سپریم کورٹ نے جج لویا کی موت سے متعلق دستاویزات عرضی گذار کودینے کے لیے حکومت مہاراشٹر کو حکم دیا

نئی دہلی: سپریم کورٹ نے سی بی آئی جج بی ایچ لویا کی موت کے پس پشت کارفرما محرکات کو طشت از بام کرنے کے عدالتی عمل میں شفافیت یقینی بنانے کے لیے حکومت مہاراشٹر کو حکم جاری کیا ہے کہ جج لویا کی پر اسرار موت کے حوالے سے تمام دستاویزات عرضی گذار کو بھی دی جائیں۔
جس وقت لویا کا انتقال ہوا تو وہ سہراب الدین شیخ پولس انکاؤنٹر کیس کی سماعت کر رہے تھے۔ جسٹس ارون مشرا نے ، جو جسٹس موہن ایم شانتانوگودار کے ساتھ دو رکنی بنچ کی سربراہی کر رہے ہیں، بھری عدالت میں ببانگ دہل کہا کہ یہ ایسا معاملہ ہے جس میں عرضی گذار کو ہر بات معلوم ہونی چاہیے۔
سپریم کورٹ کا یہ حکم 13جنوری کو سپریم کورٹ کے چار ججز کے چیف جسٹس پر اس الزام کے بعد جاری ہوا ہے جس میں ان ججوں نے کہا تھا کہ جج لویا کی موت کا معاملہ چیف جسٹس دیپک مشرا نے اپنی پسند مقدم رکھتے ہوئے جسٹس ارون مشرا کی بنچ کو منتقل کر دیا۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Sc orders maharashtra govt to hand over documents related to judge loyas death to petitioners in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply