سپریم کورٹ نے جموں و کشمیر کے حوالے سے آئین کی دفعہ35اے پر سماعت جنوری2019تک موخر کردی

نئی دہلی: سپریم کورٹ نے جموں و کشمیر کو خصوصی درجہ دینے والی آئین کے آرٹیکل 35اے کی قانونی حیثیت کو چیلنج کرنے والی عذر داریوں پر سماعت جنوری2019تک موخر کر دی۔

واضح ہو کہ اس دفعہ کے تحت ریاست کے مستقل رہائشیوں کو جو مراعات حاصل ہیں ان میں غیر ریاستی شہریوں کو جموں وکشمیر میں مستقل سکونت اختیار کرنے ، غیر منقولہ جائیداد خریدنے ، سرکاری نوکریاں حاصل کرنے ، ووٹ ڈالنے کے حق اور دیگر سرکاری سہولتوں سے محروم رکھا جاتا ہے۔

مرکز اور جموں و کشمیر حکومت نے ریاست میں ہونے والے پنچایتی و بلدیاتی انتخابات کے پیش نظر کیس کی سماعت ملتوی کرنے کی درخواست کی۔ قبل ازیں چیف جسٹس دیپک مشرا اور جسٹس اے ایم کھانولکر پر مشتمل بنچ نے یہ کہتے ہوئے کہ اس معاملہ کو آئینی بنچ کو سونپنے کے حوالے سے کوئی فیصلہ کرنے کے لئے تین رکنی بنچ تشکیل دینے کی ضرورت ہے جو یہ طے کرے گی کہ اس معاملہ کو آئینی بنچ کے پاس بھیجا جائے یا نہیں ، سماعت27اگست تک ملتوی کر دی تھی۔

جمعرات کو وادی کشمیر اور جموںکے کچھ علاقوں میں جموں و کشمیر کے عوام کو حاصل مراعت سے محروم کرنے کے لیے دفعہ35اے سے چھیڑ چھاڑ کے خلاف زبردست احتجاج کیا گیا اور مکمل ہڑتال رہی۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Sc defers hearing on article 35a to jan 2019 in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply