سپریم کورٹ نے معلوم ذرائع سے زائد آمدنی کیس میں ششی کلاکوچار سال کے لیے جیل بھیج دیا

نئی دہلی: تمل ناڈو میں جاری اقتدار کی جنگ کے درمیان سپریم کورٹ نے منگل کو انا ڈی ایم کے کی جنرل سکریٹری ششی کلا کو معلوم ذرائع سے زائدد دولت رکھنے کا مجرم قرار دے کر چار سال کی سزائے قید سنا کر ان کا وزیر اعلیٰ بننے کا خواب چکنا چور کر دیا۔سپریم کورٹ نے ہائی کورٹ کے فیصلہ کو باطل قرار دے کر نچلی عدالت کے فیصلہ کی جس میں اس نے ششی کلا کو قصور وار قرار دیا تھا، توثیق کر دی۔ قید کی سزا کے علاوہ سپریم کورٹ نے ان پر 10کروڑ روپے کا جرمانہ بھی کیا۔
علاوہ ازیں اس سزا کے بعد ششی کلا نہ تو ریاست کی وزیر اعلیٰ بن سکتی ہیں اور نہ ہی دس سال تک انتخابات لڑسکتی ہیں۔سپریم کورٹ کے اس فیصلہ اور ساتھ اس حکم کے بعد کہ ششی کلا فوری طور پر خود سپردگی کر دیں،پولس نے انہیں گرفتار کر لیا۔لیکن جیل جانے سے پہلے ششی کلا نے تمل ناڈو اسمبلی میں پارٹی ممبران کا ہنگامی اجلاس طلب کر کے او۔ پنیر سیلوام کو پارٹی کی ابتدائی رکنیت سے خارج کر کے اے۔ پلنی سوامی کو قانون ساز پارٹی کا قائد منتخب کر لیا۔ جبکہ پنیر سیلوام کے حامی ان کی رہائش گاہ کے باہر کثیر تعداد میں جمع ہو کر ڈھول تاشوں اور آتش بازی کر کے جشن منا رہے ہیں۔واضح رہے کہ پیناکی چندر گھوس اور امیتو رائے پر مشتمل دو ججی بنچ نے ششی کلا کے خلاف فیصلہ 7جون 2016کو ہی محفوظ کر لیا تھا جسے آج منگل کو سنایا گیا۔

Title: sc convicts sasikala in da case | In Category: ہندوستان  ( india )

Leave a Reply