سپریم کورٹ نے صحافی قتل کیس میں تیج پرتاپ کے خلاف کارروائی بند کر دی

نئی دہلی: سپریم کورٹ نے سیوان کے ایک صحافی کے قتل کیس میں جیل میں قید آر جے ڈی سربراہ لالو پرساد یادو کے بیٹے اور بہار کے سابق وزیر تیج پرتاپ کے خلاف کارروائی بند کر دی۔
سپریم کورٹ نے سی بی آئی کو حکم دیا تھا کہ ان میڈیا رپورٹوں اور تصاویر اور ویڈیوز کی جانچ کریں جن میں بہار کے سابق وزیر صحت تیج پرتاپ کو دو مفرور ملزموں محمد کیف اور جاوید ، جو فی الحال راج دیپ رنجن قتل کیس میں عدالتی تحویل میں ہیں،کے ساتھ دکھایا گیا ہے۔
چیف جسٹس دیپک مشرا اور جسٹس اے ایم کھانویلکر اور جسٹس ڈی وائی چند ر چوڑ پر مشتمل تین ججی بنچ نے ایڈیشنل سالسٹر جنرل امن لیکھی کے اس استدلال کو تسلیم کر لیا کہ سی بی آئی آر جے ڈی لیڈر کے خلاف کوئی ایسی شہادت نہیں پا سکی جس سے تیج پرتاپ کا اس معاملہ میں ملوچ ہونا ثابت ہوتا ہو۔
بعدا زاں عدالت نے تیج پرتاپ کے خلاف کیس بند کرنے کا حکم دیتے ہوئے صحافی کی بیوہ سے کہاکہ اگر مستقبل میں انہیں ایسا کوئی ثبوت ملے جس سے تیج پرتاپ کا اس میںملوث ہوناثابت ہوتاہے تو وہ کیس دوبارہ کھلوا سکتی ہیں۔

Title: sc closes proceedings against tej pratap in murder case | In Category: ہندوستان  ( india )

Leave a Reply