سپریم کورٹ نے گجرات فسادات کی تحقیقات کرنے والی ایس آئی ٹی سربراہ کو جانچ ٹیم سے ہٹنے کی اجازت دیدی

نئی دہلی:سپریم کورٹ نے 2002 گجرات فسادات کی تفتیش کے لئے قائم کی گئی خصوصی تفتیشی ٹیم (ایس آئی ٹی) کے سربراہ آر کے راگھون کو اس کام سے رخصت دے دی۔ عدالت نے مرکزی تفتیشی بیورو (سی بی آئی) کے سابق سربراہ مسٹر راگھون کو صحت وجوہات کی بنیاد پر اس کام کی ذمہ داریوں سے رخصت دے دی ہے۔
مسٹر راگھون نے خراب صحت کا حوالہ دیتے ہوئے ایس آئی ٹی سربراہ کے کام سے رخصت دینے کی گزار ش کی تھی۔ اس معاملے کے عدالت دوست ہریش سالوے نے چیف جسٹس جے ایس کیہر، جسٹس ڈی وائی چندرچوڑ اور جسٹس سنجے کشن کول کی بنچ سے درخواست کی کہ مسٹر راگھون کو اس کام سے رخصت دے دی جانی چاہیے۔
عدالت عظمیٰ نے ایس آئی ٹی رکن کے ونکٹیشن کو بھی ان کے کام سے رخصت دے دی۔ بنچ نے ایس آئی ٹی کے کام کاج کی تعریف کرتے ہوئے ایک دیگر رکن اے کے ملہوترا کو ایس آئی ٹی ٹیم کا فی الحال کام کاج سنبھالنے اور ہر تین مہینہ پر ٹیم کے کام کاج کی رپورٹ سونپنے کا حکم دیا ہے۔ خیال ر ہے کہ عدالت کی نگرانی میں ایس آئی ٹی گودھرا فسادات کے9اہم معاملات کی تحقیقات کر رہی ہے، جس میں نرودا پاٹیا کا فساد بھی شامل ہے۔ اس فساد میں ایک کمیونٹی کے 11 افراد مارے گئے تھے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Sc allows sit chief r k raghavan to leave probe team in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply