راجیہ سبھا ڈپٹی چیرمین نے یکساں سول کوڈ پر تحریک التو کی تجویز نامنظورکردی

نئی دہلی:یکساں سول کوڈ پر بحث کرانے کی مانگ کے سلسلے میں جنتا دل متحدہ (جے ڈی یو) کے لیڈر شرد یادو کی تحریک التوا کی تجویز کو ڈپٹی چیئرمین پی جے کورین نے آج نامنظور کر دیا۔ وقفہ صفر کے دوران مسٹر یادو نے ضابطہ 267 کے تحت اس تجویز کو پیش کرنے کی کوشش کی۔انہوں نے کہا کہ یہ بہت سنگین مسئلہ ہے۔ مذہبی تنوع والے اس ملک میں تمام مذاہب کے لوگوں کے لئے یکساں سول کوڈ لاگو نہیں کیا جا سکتا ہے۔یہ آئین میں دیے گئے بنیادی حقوق کی بھی خلاف ورزی ہے۔
انہوں نے کہا کہ ان کی پارٹی کے ساتھ ہی بہار کے وزیر اعلیٰ اور دوسری ریاستوں کی حکومتوں کو قانون کمیشن نے خط بھیج کر اس سلسلے میں رائے مانگی ہے۔اس پر تمام مذاہب کے لوگوں کی رائے بھی لی جانی چاہئے۔ اسی دوران دوسرے رکن بھی کچھ بولنے لگے لیکن مسٹر کورین کچھ بولنا چاہ رہے تھے تبھی اپوزیشن لیڈر غلام نبی آزاد نے کہا کہ یہ بہت سنگین مسئلہ ہے۔
پانچ ریاستوں میں اسمبلی انتخابات کا عمل جاری ہے اور اس کے پیش نظر اس معاملے پر ابھی بحث نہیں کرائی جا سکتی ہے۔لہذا اس تجویز کو قبول نہیں کیا جانا چاہئے۔ تب مسٹر کورین نے کہا کہ وہ بھی یہی کہنے والے تھے۔ چیئرمین نے اس نوٹس کو قبول نہیں کیا۔ دریں اثنا پارلیمانی امور کے وزیر مملکت مختار عباس نقوی نے کہا کہ یکساں سول کوڈ آئین کے ضابطوں کے مطابق ہیں۔ مسلم خواتین سے متعلق تین طلاق کا معاملہ بھی اس میں شامل ہے۔

Title: ruckus in rajya sabha as tmc mps walkout and sharad yadav gives adjournment notice | In Category: ہندوستان  ( india )

Leave a Reply