جنگ آزادی کی تحریک میں مسلمانوں کے کردارکو کسی طرح نظر انداز نہیں کیا جاسکتا ہے:ایڈوکیٹ ارشاد احمد

علی گڑھ:انجمن محبان اردو کے اراکین نے بعنوان ”تحریک آزادی اورمسلمان“ کے عنوان سے ایک مذاکرے اور شعری نشست کا انعقاد کیا ۔ جس کی صدارت سپریم کورٹ کے ایڈوکیٹ اور علی گڑھ مسلم یونیورسٹی اولڈ بوئیز اسوسیشن دہلی کے سابق صدر ارشاد احمد نے کی۔اپنے صدارتی خطبے میں موصوف نے کہا”میں انجمن محبان اردو کا شکر گزار ہوں کہ اس پروگرام کا انعقاد کیا دراصل اس پروگرام کا مقصد تحریک آزادی میں مسلمانوں کا کیا حصّہ رہا ہے اس بات پر روشنی ڈالنا ہے۔

آج کے اس سیاسی دور میں مسلمانوں کی قربانیوں کو فراموش کردیا گیا ہے۔لیکن تاریخ شاہد ہے کہ مسلمانوں نے تحریک آزادی میں بڑھ چڑھ کر حصّہ لیا ہے اور اپنے جان و مال کی قربانی دی ہے۔اس لئے جنگ آزادی کی تحریک میں مسلمانوں کے کردارکو کسی طرح نظر انداز نہیں کیا جاسکتا ہے۔“مذاکرے کے بعد ایک شعری نشست کا انعقاد عمل میں آیا ۔جس میں نظامت کے فرائض عبدالحفیظ خان نے ادا کئے۔محفل میں پڑھے گئے منتخب اشعار مندرجہ ذیل ہیں:
چمک رہا تھا جو آکاش پر بنا سورج
زمیں پہ آن کے بونا دکھائی دیتا ہے
ڈاکٹر ہلال نقوی

یوں لگی منہ کو ہمارے تیری آنکھوں کی شراب
کوئی میخانہ نہ ڈھونڈا تیرے میخانے کے بعد
ڈاکٹر رضی امروہوی

تخیلات کی وادی میں جو اٹھی تھی کبھی
وہ فکر میری مسلسل ابھی اڑان میں ہے
عادل فراز

پھول جب مسکرانے لگتا ہے
خار بھی سر اٹھانے لگتا ہے
ذوالفقار زلفی

وہ لوگ جو یزید کے لشکر میں تھے کبھی
جدران وہی آج ابھرنے لگے ہیں لوگ
عبد الحفیظ جدران
پروگرام میں شامل ہونے والوں میںیاسرعلی خان،شبیر خان،حشمت رضا جدران،محمد فیض،محمد معروف،محمد آصف اور تنظیر الحق پیش پیش رہے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Role of muslims in indias freedom movement in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News
What do you think? Write Your Comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.