ملک گیر پیمانے پریوم جمہوریہ پورے کوش و خروش سے منایا گیا

نئی دہلی:ملک بھر میں سخت حفاظتی انتظامات کے درمیان 68 واں یوم جمہوریہ روایتی تزک و احتشام اور جوش و خروش کے ساتھ منایا گیا اس موقع پر صدر پرنب مکھرجی، نائب صدر محمد حامد انصاری اور وزیر اعظم نریندر مودی نے ملک کے عوام کو مبارک دی۔ اصل تقریب نئی دہلی میں راج پتھ پر منعقد ہوئی جہاں صدر جمہوریہ نے تینوں فوجوں کی سلامی لی۔ تقریبا ڈیڑھ گھنٹے تک چلنے والے اس رنگا رنگ پروگرام میں تینوں افواج، سیکورٹی فورسز اور پولیس کے جوانوں نے پریڈ میں حصہ لیا۔
پریڈ میں اسکول کے بچوں کے پروگرام اور تمام ریاستوں کی ثقافت اور ملک کی ترقی کی عکاسی کرنے والی جھانکیاں نکالی گئیں۔پریڈ کے اختتام تک سیکورٹی فورسز کے موٹر سائیکل دستوں اور فضائیہ کے طیاروں نے حیرت انگیز کرتب دکھا کر سب کو ششدر کر دیا۔ اس سال کے یوم جمہوریہ کی تقریب میں عرب امارات کی مسلح افواج کے ڈپٹی سپریم کمانڈر محمد بن زائد النیہان مہمان خصوصی تھے۔راج پتھ پر ہلکی بونداباندی کے درمیان ڈیڑھ گھنٹے چلنے والی اہم تقریب کی پریڈ میں کل 23 جھانکیاں، فوجی دستے، نیم فوجی دستوں، این سی سی، این ایس ایس اور این ایس جی کے 15 مارچنگ اسکواڈ، متحدہ عرب امارات کی ایک مارچنگ دستہ اور ان کے بینڈوں نے حصہ لیا۔ ساتھ ہی اسکول کے بچوں نے رنگا رنگ پروگرام بھی پیش کئے۔ لیکن، سب سے زیادہ توجہ کا مرکز فلائی پاسٹ اور پریڈ کے اختتام میں ایئر فورس کے طیاروں اور موٹر سائیکل پر کور آف ملٹری پولیس کے ’سفید اشو‘ کے حیرت انگیز کارنامے رہے۔
تقریب کا آغاز انڈیا گیٹ واقع امر جوان جیوتی پر وزیر اعظم نریندر مودی کے گلہائے عقیدت پیش کرنے کے ساتھ ہوا۔ وزیر دفاع منوہر پاریکر نے بھی تینوں افواج کے سربراہان کے ساتھ شہیدوں کو خراج عقیدت پیش کیا۔ اس کے بعد وزیر اعظم نے سلامی پلیٹ فارم پر آکر تینوں افواج کے سپریم کمانڈر اور صدر پرنب مکھرجی کا استقبال کیا۔ جھنڈا لہرانے اور 21 توپوں کی سلامی کے ساتھ ہی صبح 10 پریڈ شروع ہو گئی۔ دہلی زون کے جنرل آفیسر کمانڈنگ لیفٹیننٹ جنرل ایم ایم نروانے پریڈ کمانڈر اور دہلی زون کے چیف آف اسٹاف میجر جنرل راجیش سہائے پریڈ کے سیکنڈ ان کمانڈ تھے۔ راج پتھ پر آج ملک کی بڑھتی ہوئی خواتین کی طاقت بھی نظر آئی۔ بہت سے مارچنگ دستوں کی قیادت خواتین نے کیا۔ بحریہ کے 144 بحریہ کے مارچنگ دستے کی قیادت لیفٹیننٹ کمانڈر ارپنا نائر نے کیا۔ اس گروپ میں لیفٹیننٹ تنو اور لیفٹیننٹ مدار کلکرنی بھی شامل تھیں۔
فضائیہ کے مارچنگ دستے میں تین خواتین اہلکار فلائٹ لیفٹیننٹ ششی کلا ششادری میتری، فلائٹ لیفٹیننٹ درش?ا ناتھ اور فلائنگ آفیسر ترپتی کے چترویدی شامل تھیں۔ کوسٹ گارڈ کے مارچنگ دستے میں دو خواتین اہلکار تھیں.ایئر فورس کے ملکی طاقت کی علامت لڑاکا طیارے تیجس، ایئر فورس کی طاقت کی ریڑھ کی ہڈی مانے جانے والے سخوئی ، جیگوار اور مگ لڑاکا طیاروں، لڑاکا ہیلی کاپٹر رودر اور اعلی درجے ہلکے ہیلی کاپٹر دھرو کے علاوہ بھاری بھرکم کارگو طیارے ہرکیولس اور گلوب ماسٹر نے بھی فلائی پاسٹ میں حصہ لیا۔ اپنی جان خطرے میں ڈال کر دوسروں کی حفاظت کرنے والے قومی بہادری ایوارڈ سے نوازے گئے 25 بہادر بچوں کی سواری بھی پریڈ کی توجہ کا مرکز رہی۔ اس بار چار بچوں کو یہ ایوارڈ بعد از مرگ دیا گیا ہے۔ تین سال کے بعد اس بار دہلی کو دارالحکومت کی جھانکیاں بھی دیکھنے کو ملی۔ اس میں تعلیم کے شعبے میں بہتری کے ساتھ ساتھ پرائیوٹ اسکولوں کی طرز پر تیار کئے جا رہے ماڈل اسکولوں کو دکھایا گیا۔
آسام میں چھ بم دھماکوں کی خبر سے یوم جمہوریہ کا جشن کچھ دھندلا بھی رہا۔ملک کی تمام ریاستوں کے دارالحکومتوں سے بھی یوم جمہوریہ کی تقریبات جوش و خروش کے ساتھ منائے جانے کی خبریں ملی ہیں۔ دہلی میں بھارتیہ جنتا پارٹی کے مرکزی ہیڈکوارٹر پر بھی یوم جمہوریہ کا جشن دھوم دھام سے منایا گیا۔ پارٹی کے قومی صدر امت شاہ نے وہاں قومی پرچم لہرایا۔ اسی کے ساتھ کانگریس کے ہیڈ کوارٹر میں بھی یوم جمہوریہ نہایت تزک احتشام کے ساتھ منایا گیا۔

Title: republic day celebrated with enthusiasm in all corners of india | In Category: ہندوستان  ( india )

Leave a Reply