ہندوستان ایک سیکولر ملک ہے اور مذہب کی بنیاد پر اس میں کوئی امتیاز نہیں ہوگا: راج ناتھ سنگھ

نئی دہلی: مرکزی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے پاکستان کا نام لئے بغیر دہشت گردی کے خلاف سخت پیغام دیتے ہوئے آج کہا کہ کچھ ممالک دہشت گردی کو سرکاری پالیسی کے طور پر استعمال کر رہے ہیں جو بدقسمتی کی بات ہے۔ انہوں نے تمام اختلافات کو بات چیت کے ذریعہ حل کرنے کی تجویز رکھی۔
مسٹر راجناتھ سنگھ نے یہاں عیسائی کمیونٹی کے لیڈروں کے جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان پوری دنیا کے لئے “رواداری کی یونیورسٹی” ہے اور ہندوستان طویل عرصے سے تمام مذاہب کو ساتھ لے کر چلتا آیا ہے اور تمام طرح کے اختلافات کو بات چیت کے ذریعے ہی حل کیا جاسکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ خیالات کا اختلاف ہو سکتا ہے اور اسے بات چیت کی میز پر حل کیا جاسکتا، لیکن اس کا مطلب یہ نہیں ہے کہ غیرمطمئن عناصر ہاتھوں میں بندوق اٹھا لیں۔
اختلافات کا حل بات چیت سے ہی کیا جا سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کا کوئی مذہب یا ذات نہیں ہوتی لیکن کچھ لوگ ان دونوں کو ایک کرنے کی کوشش کرتے ہیں۔ ہندوستان ایک سیکولر ملک ہے اور مذہب کی بنیاد پر اس میں کوئی امتیاز نہیں ہوگا۔
وزیر داخلہ نے کہا کہ حکومت سماج دشمن عناصر اور افواہ پھیلانے والوں پر نظر رکھی ہوئی ہے اور ملک میں قانون کی حکمرانی کو قائم رکھا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ کئی ممالک دہشت گردی سے متاثر ہیں اور پوری دنیا کو متحد ہوکر اس مسئلہ سے نمٹنا چاہئے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Religious persecution will never be allowed rajnath singh in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply