راجستھان میں ایک اور بی جے پی ممبر اسمبلی پارٹی سے مستعفی

جے پور: راجستھان میں بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی ) کے ایک ممبر اسمبلی گیاندیو آہوجہ نے پاٹی کے آمرانہ رویہ کا شکوہ کرتے ہوئے پارٹی سے استعفیٰ دے دیا۔

آہوجہ نے، جنہیں اسی ماہ ہونے والے اسمبلی انتخابات کے لیے الور ضلع کے رام گڑھ اسمبلی حلقہ سے دوبارہ انتخاب لڑنے کے لیے بی جے پی نے ٹکٹ نہیں دیا، کہا کہ وہ آزاد امیدوار کے طور پر چناؤ لڑیں گے۔

پارٹی نے آہوجہ کو ریاست کی تین سیٹوں بشمول الور پارلیمانی حلقوں کے ضمنی انتخابات میں کانگریس کی کامیابی کے کچھ مہینوں بعد ،امیدواروں کی فہرست سے ڈراپ کیا گیا۔آہوجہ نے کہا کہ پارٹی کے ڈکٹیٹرانہرویہ کی وجہ سے انہوں نے پارٹی کی بنیادی رکنیت سے اسعفیٰ دیا ہے۔اب وہ رام جنم بھومی، تحفظ گائے اور ہندوتوا جیسے موضوعات پر ایک آزاد امیدوار کے طور پر الیکشن لڑیں گے۔

اس سال کے اوائل میں آہوجہ نے ایک آڈیو کلپ جاری کیا تھا جس انہوںنے الور اور اجمیرلوک سبھا ضمنی انتخابات میں پارٹی کی شکست کا ذمہ دار وزیر اعلیٰ وسندھرا راجے کو قرار دیا ہے۔

آہوجہ اپنے کئی متنازعہ بیانات سے روشنی میں آئے تھے۔فروری2016میں انہوں نے دعویٰ کیا تھا کہ جواہر لال نہرو یونیورسٹی میں روزانہ 50ہزار ہڈیاں، 3000استعمال شدہ کنڈوم ،500استعمال شدہ اسقاط حمل انجکشن اور دس ہزار سگریٹ کے ٹوٹے پڑے ملتے ہیں اور کیمپس میں لڑکے و لڑکیاں مادر زاد عریاں رقص کرتے ہیں۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Rajasthan mla behind condoms in jnu claim quits bjp in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News
What do you think? Write Your Comment