راہل گاندھی لوک سبھا میں حکومت کے خلاف زہر افشانی کے بعد مودی سے گلے ملے

نئی دہلی: کانگریس صدر راہل گاندھی نے مودی حکومت کے خلاف پیش کی گئی تحریک عدم اعتماد میں اظہار خیال کرتے ہوئے این ڈی اے حکومت کو کم وزیر اعظم نریندر مودی کو زیادہ ہدف تنقید بنانے کے بعد اپنی نشست پر بیٹھنے سے پہلے وزیر اعظم کی نشست کے قریب پہنچ کر ان سے گلے مل کر سب کو ششدر کر دیا خود وزیر اعظم راہل کے اس انداز پر ہکا بکا رہ گئے۔

یوں تو راہل گاندھی نے اپنے38منٹ کے دیے وقت میں متعدد ان موضوعات کو چھیڑا جن کے سہارے2014میں بی جے پی کی بیل مندھے چڑھی تھی لیکن دو معاملات،ہجومی تشدد اور کرپشن، پر انہوں نے وزیر اعظم پر کڑی نکتہ چینی کی۔

راہل گاندھی نے ہجومی تشدد کی وارداتوں کے حوالے سے،جن میں کئی خواتین بھی شکار بنی ہیں، کہا کہ پہلی بار حکومت ہند ہماری خواتین کا تحفظ کرنے میں ناکام رہی ہے۔راہل نے کہا کہ ہجومی تشدد میں لوگوں کو کہیں بھی پکڑ کر پیٹ پیٹ کر ہلاک کیا جارہا ہے لیکن ہمارے وزیر اعظم چپی سادھے ہیں۔ راہل نے کہا کہ جب بھی کسی پر حملہ ہوتا ہے بی آر امبیڈکر کے آئین پر حملہ ہوتا ہے۔

اس ایوان پر حملہ ہوتا ہے۔راہل نے آندھرا پردیش کے ممبران پارلیمنٹ کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آپ لوگ 21ویں صدی کے’ سیاسی اسلحہ‘ کا شکار ہیں اور اس جدید ترین اسلحہ کے صرف آپ تنہا ہی شکار نہیں ہیں بلکہ اور بھی ہیں اور اس سیاسی ہتھیار کو ”جملہ حملہ“کہا جاتا ہے۔حکومت نے وعدہ کیا تھا کہ ہر شخص کے بینک کھاتے میں 15لاکھ روپے منتقل کیے جائیں گے۔اسی حکومت نے 2کروڑ نوجوانوں کو روزگار مہیا کرنے کا وعدہ کیا تھا۔

راہل نے کہا کہ کسان وزیر اعظم سے پوچھ رہے ہیں کہ کیا انہوں نے کئی صنعتکاروں پر واجب الادا ڈھائی لاکھ کروڑ کا قرضہ معاف کر دیا ہے۔ لیکن وزیر اعظم صاحب آپ نے کسانوں کا قرضہ معاف نہٰں کیا ۔آپ نے ان سے مذاق کیا ۔آپ کے وزیر مالیات نے ان سے مذاق کیا۔ راہل نے یہ بھی کہا کہ وزیر اعظم مجھ سے آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر بات نہیں کر سکتے۔ وزیر اعظم مودی کے جن جن تاجروں اور صنعتکاروں سے تعلقات ہیں ان سے ہر شخص واقف ہے۔

راہل نے کہا کہ مودی جی بتائیں کہ ان کے اشتہارت پر جو پیسہ خرچ ہوتا ہے وہ کہاں سے آرہا ہے۔ راہل نے کہا کہ وزیر اعظم مودی خود کو ملک کا چوکیدار کہتے ہیں کہ نہ کھانے دوں گا نہ کھاؤں گا ۔لیکن ایسا نہیں ہے ۔ وہ چوکیدار نہیں بلکہ کرپشن میں ساجھے دار ہیں۔ اگر ایسا نہیں ہے تو وہ امیت شاہ کے بیٹے کے معاملہ میںکیوں خاموش رہے۔

یہی نہیں بلکہ وزیر دفاع نرملا سیتا رمن نے بھی وزیر اعظم مودی کے دباؤ مین رافیل سودے کے حوالے سے جھوت بولا۔راہل نے کہا کہ بی جے پی حکومت خواتین کو تحفظ دینے میں ناکام ہو گئی ہے۔ اور یہ کہ آپ مجھ سے نفرت کرتے ہیں آپ مجھے پپو پکار سکتے ہیں مجھے کوئی پروا نہیں مجھے برا نہیں لگتا لیکن مجھے آپ سے کوئی کینہ بغض یا نفرت نہیں ہے۔

راہل گاندھی نے اپنی تقریر مکمل کی اور اپنی نشست ہر واپس جاتے ہوئے اگلی صف میں بیٹھے وزیر اعظم کے گلے لگ گئے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Rahul hugs pm modi in ls in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply