بی جے پی نے ہندوؤں کو دہشت گرد کہنا کانگریس کی اقلیتوں کو خوش کرنے والی پالیسی کا جزو بتایا

نئی دہلی: بھارتیہ جنتاپارٹی (بی جے پی) نے کہا کہ کانگریس کے سینیئر لیڈر و جنرل سکریٹری مسٹر دگ وجے سنگھ کا ہندوؤں کو دہشت گرد کہنا در اصل پارلیمانی انتخابات سے پہلے کانگریس کی اقلیتوں کی خو شامد کرنے کی پالیسی کا ایک جزو ہے ۔

بی جے پی کے ترجمان ڈاکٹر سمبت پاترا نے ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ کانگریس کے سینئر لیڈر دگ وجے سنگھ جو خیر سے پارٹی کے جنرل سکریٹری ہیں ایک بار پھر مدھیہ پردیش کے وزیر اعلیٰ کے عہدے پر فائز ہونے کے لیے بے چین نظر آتے ہیں۔

یہی وجہ ہے اب انہوں نے سر عام پندوؤں کو دہشت گرد کہنا شروع کر دیا ہے۔انہوں نے کہا کہ مسٹر سنگھ کے اس بیان سے دہشت گردوں کو حمایت دے رہے پاکستان کو کافی حوصلہ ملا ہوگا ۔

ادھر مدھیہ پردیش کے وزیر اعلیٰ شیو راج سنگھ چوہان نے کہا کہ در اصل دگ وجے سنگھ کی سوچنے سمجھنے کی صلاحیت مفقود ہو چکی ہے اور وہ ریاست کی گدی کھو بیٹھنے کے بعد دماغی توازن بھی کھو بیٹھے ہیں۔اسی لیے اناپ شناپ بول رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اس قسم کی بیہودہ باتیں کرنے کے باعث کانگریس قیادت کو چاہیے کہ وہ دگ وجے جیسے عناصر کو پارٹی سے نکال باہر کریں۔یا پھر کانگریس صدر راہل گاندھی دگ وجے سے کہہ دیں کہ وہ خود ہی باعزت طور پر کانگریس کا دامن چھوڑنے کا اعلان کردیں۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Rahul gandhi must ask digvijay singh to leave congress shivraj singh chouhan in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply