غریب اور پسماندہ کنبوںکی رسوئی تک گیس کنکشن کی رسائی میری حکومت نے ہی کرائی : وزیر اعظم مودی

نئی دہلی:وزیر اعظم نریندر مودی نے اپنی پسندیدہ اور مرغوب اسکیموں میںن سے ایک پردھان منتری اجول یوجنا کا خاص طور پرذکر کرتے ہوئے کہا کہ اس کا مقصد غریب اور پسماندہ کنبوں کو رسوئی گیس کنکشن مہیا کرنا تھا۔

وزیر اعظم نے نمو ایپ کے توسط سے اڑیسہ، چھتیس گڑھ، جموں و کشمیر ، تمل ناڈو اور آسام میں اس سے استفادہ کرنے والوں سے بیک وقت براہ راست خطاب کرتے ہوئے کہا کہ منشی پریم چند کیی کہانی کے کردار حامد نے انہیں ترغیب دی ہے جو عید کے روز جب تمام بچے کھلونے اور مٹھائیاں خرید رہے تھے حامد نے اپنی بوڑھی دادی کے لیے چمٹا خریدا تھا تاکہ روٹی سینکتے وقت ان کے ہاتھ نہ جلیں۔حامد کا یہ کردار پڑھ کر انہیں احساس ہوا کہ ایک بچہ اپنی دادی کے لیے ایسا کر سکتا ہے تو ایک وزیر اعظم ایسا کیوں نہیں کر سکتا۔

انہوں نے مزید کہا کہ ان کے وزیر اعظم بننے تک عام طور پر امیر اور متوط طبقہ کے لوگوں کو ہی رسوئی گیس کا کنکشن ملتا تھا لیکن ان کی حکومت نے گذشتہ چار سال میں دس کروڑ نئے گیس کنکشن تقسیم کرکے غریبوں، نچلے طبقات کے لوگوں ، دلتوں اور قبائلیوں کی زندگی کو بااختیار بنایا ہے مسٹر مودی نے کہا کہ ملک میں رسوئی گیس کی ابتدا آزادی کے بعد ہی ہوگئی تھی لیکن 2014 میں ان کی حکومت کے اقتدار میں آنے تک ملک میں تیرہ کروڑ لوگوں کو ہی اس کے کنکشن ملے تھے۔

انہوں نے کہاکہ پہلے کی حکومتوں کے دور میں رسوئی گیس کا کنکشن عام طور ور امیر لوگوں کو ہی ملتا تھا۔ لیکن پچھلے چار سال میں ان کی حکومت نے دس کروڑ نئے رسوئی گیس کنکشن دے کر غریبوں، دلتوں نچلے طبقہ کے لوگوں او رقبائلیوں کی زندگی کو بااختیار بنایا ہے۔

خط افلاس سے نیچے رہنے والے چار کروڑ خاندانوں کو اب تک رسوئی گیس کے کنکشن تقسیم کئے گئے ہیں ان میں 45فیصد دلت ہیں۔وزیر اعظم نے کہا کہ پہلے رسوئی گیس کا کنکشن ممبران پارلیمنٹ اور ممبران اسمبلی کی سفارش کرنے پر ہی ملتا تھا اور یہ صرف بڑے لوگوں کے پاس ہوتا تھا۔ لیکن آج ملک کے80فیصد کنبوں کو گیس کنکشن دستیاب ہے ۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Premchands hamid inspires ujjwala scheme pm in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply