ایک مذہب اور عدم رواداری سے ملک کی ساکھ مجروح ہوگی:آر ایس ایس ہیڈ کوارٹر میں پرنب مکھرجی کا خطاب

ناگپور : سابق صدر جمہوریہ پرنب مکھرجی نے آر ایس ایس ہیڈ کوارٹرمیں آر ایس ایس کیڈر سے خطاب کرتے ہوئے انتباہ دیا کہ ہندوستان کو مذہب، راسخ الاعتقادی اور عدم رواداری کے حوالے سے متعارف کرانے سے ملک کی ساکھ مجروح ہو گی۔

سابق صدر اور کانگریس کے سینیئر لیڈرنے مزید کہا کہ ہندوستان میں قومیت ایک زبان اور ایک مذہب کی نہیں ہے بلکہ ہندوستان کی طاقت رواداری اور تنوع میں مخفی ہے۔ انہوںنے کہا کہ وہ اس پروگرام میں ملک، قومیت اور حب الاطنی پر اپنے خیالات کا اظہار کرنے کے لیے مدعو کیے گئے ہیں۔

انہوں نے کہا ان تینوں الفاظ کو ایک دوسرے سے جدا کرکے دیکھنا ممکن نہیں ہے۔ ان الفاظوں کو سمجھنے کے لیے ہمیں اس کی تشریح کرنے اور لغت کا سہارا لینے کی ضرورت ہے۔

پرنب نے کہا کہ ہندوستان ایک آزاد سماج تھا اور ماضی کی تاریخ میں شاہراہ ریشم سے براہ راست جڑا ہوا تھا۔جس کے باعث مختلف النسل کے لوگوں کی یہاں آمد شروع ہوئی ۔

اس سے قبل ہیڈ کوارٹر پہنچنے کے فوراً بعد سابق صدر پرنب مکجرجی نے سنگھ کے بانی کے بی ہیڈ گیورکو یہ کہتے ہوئے خراج عقیدت پیش کیا کہ وہ آج یہاں مادر ہند کے ایک عظیم سپوت کو خراج عقیدت پیش کرنے آئے ہیں۔

آ رایس ایس سربراہ موہن بھاگوت کے ہمراہ مکھرجی نے ہیڈگیوار کے ذریعہ 1925میں دسہرہ کے روز جس کمرے میں آر ایس ایس کی داغ بیل ڈالی تھی اس کا دورہ کرنے کے بعد سنگھ وزیٹرز بک میں اپنے احساسات بھی تحریر کیے۔

Title: pranab mukherjee shown mirror to rss at their hq | In Category: ہندوستان  ( india )

Leave a Reply