کرناٹک میں امتناعی احکامات کے نفاذ کے باوجود ریلی نکالنے پر بی جے پی کارکنوں کی گرفتاری و رہائی

منگلورو: پولیس نے آج یہاں کے جیوتی سرکل کے پاس امتناعی احکامات نافذ ہونے کے بعد بھی موٹر سائیکل ریلی نکال رہے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے سینکڑوں لیڈروں اور کارکنوں کو حراست میں لے لیا۔ بی جے پی لیڈروں کا یہ احتجاج صحافی گوری لنکیش کے قتل میں ریاست کے راشٹریہ سویم سیوک سنگھ (آر ایس ایس) اور بی جے پی کارکنوں کے شامل ہونے کے الزام اور اس قتل کی مرکزی تفتیشی بیورو (سی بی آئی) سے جانچ کرانے کے لئے تھا۔ محترمہ گوری لنکیش کا منگل کی رات ان کے گھر کے سامنے گولی مار کر قتل کر دیا گیا تھا۔ پولیس نے بی جے پی کو نہرو گراو¿نڈ میں عوامی اجتماع کرنے کی اجازت دی تھی لیکن بی جے پی کے ریاستی صدر بی ایسیددرپا اور اسمبلی میں حزب اختلاف کے رہنما جگدیش شیٹر اور دیگر رہنماو¿ں کے خطاب کے بعد لوگوں نے موٹر سائیکل ریلی نکالنے کے لئے جیوتی سرکل پر جمع ہونے کی کوشش کی۔ پولیس نے بیریکیڈنگ توڑ کر جیوتی سرکل کی طرف بڑھ رہے بی جے پی کارکنوں کو روکا اور انہیں حراست میں لے لیا۔ پولیس نے بی جے پی کارکنوں کو روکنے کے لئے کچھ جگہوں پر لاٹھی چارج کیا اور انہیں بسوں میں بھر کر یہاں سے دور لے کر چھوڑ دیا۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Police take hundredsof bjp workers into custody in bengaluru in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply