وشو ہندو پریشد کے سربراہ پروین توگڑیا کے انکاؤنٹر کے لیے راجستھان سے پولس بھیجی گئی تھی؟

نئی دہلی: وشو ہندو پریشد (وی ایچ پی) کے بین الاقوامی صدر پروین توگڑیا نے منگل کے روز ایک پریس کانفرنس میں الزام لگایا کہ ان کا انکاؤنٹر کرنے کے لیے راجستھان سے ایک پولس دستہ بھیجے جانے کی سازش رچی گئی تھی۔
توگڑیا نے کہا کہ رام مندر اور گﺅ کشی پر قانون بنانے جیسے معاملات پر ان کی آواز دبانے کی کوشش کی جا رہی ہے ۔ اس کے ساتھ ہی انہوںنے یہ الزام بھی لگایا کہ انٹیلی جنس بیورو(آئی بی) لوگوں کو دھمکارہی ہے۔پروین توگڑیا پیر کے روز احمد آباد کے ایک پارک میں بیہوشی کے عالم میں پڑے پائے گئے تھے۔
وہاں سے اٹھا کر انہیں ایک اسپتال میں داخل کر دیا گیا تھا۔توگڑیا پیر کی صبح اس وقت سے لاپتہ تھے جب انہیں ایک پرانے معاملہ میں گرفتار کرنے کے لیے راجستھان پولس کا ایک دستہ احمد آباد آیاتھا۔ توگڑیا نے کہا کہ جب وہ صبح پوجا کر رہے تھے تو انہیں کسی نے بتایا کہ میرا انکاؤنٹر ہونے والا ہے۔
ان کے خلاف کافی عرصہ سے سازش رچی جا رہی ہے۔انہوںنے کہا کہ راجستھان پولس سے انہیں صرف اتنی شکایت ہے کہ انکے کمرے کی کیوں تلاشی لی گئی۔سینٹرل آئی بی کی ٹیم لوگوںکو دھمکاتی ہے اور ان کے خلاف بھی فرضی معاملات بنائے جا رہے ہیں۔اورانہیں خوفزدہ کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔
لیکن انہوںنے یہ نہیںبتایاکہ ان کی آواز کون دبانا چاہتا ہے۔ البتہ اتنا کہاکہ وقت آنے پر ثبوتوں کے ساتھ بتاؤں گا۔انہوں نے یہ بھی کہا کہ کرائم برانچ سیاسی دباؤ میں آرہی ہے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: People are trying to silence my views on ram temple cow slaughter law says praveen togadia in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply