ممتا بنرجی کے سر پر انعام کا اعلان کرنے والے بیان کی مرکزی حکومت نے شدید مذمت کی

نئی دہلی: پارلیمانی امور کے وزیر مملکت مختار عباس نقوی نے آج راجیہ سبھا میں کہا کہ اگر بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے کسی لیڈر نے مغربی بنگال کی وزیر اعلیٰ محترمہ ممتا بنرجی کے خلاف قابل اعتراض تبصرہ کیا ہے تو حکومت اس کی مذمت کرتی ہے اور ریاستی حکومت اس معاملے میں مناسب کارروائی کرنے کے لئے آزاد ہے۔ ترنمول کانگریس کے ایس شیکھر رائے نے آج ایوان میں یہ معاملہ اٹھاتے ہوئے کہا کہ بی جے پی کے ایک رہنما نے کہا ہے کہ اگر کوئی مغربی بنگال کی وزیر اعلیٰ کا سر کاٹ کر لاتا ہے تو وہ انہیں 11 لاکھ کا انعام دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ایسا لگتا ہے کہ اس لیڈر کو بی جے پی کی حمایت حاصل ہے۔
ساتھ ہی انہوں نے الزام لگایا کہ بی جے پی مذہب کے نام پر دہشت گردی پھیلا رہی ہے۔ ترنمول رکن نے مطالبہ کیا کہ مرکزی حکومت کو اس معاملے کی سخت الفاظ میں مذمت کرنی چاہئے۔ بہت سی اپوزیشن جماعتوں کے ارکان نے ان کی حمایت کرتے ہوئے اس معاملے کی مذمت کی۔ مسٹر نقوی نے کہا کہ اگر کسی لیڈر نے اس طرح کا تبصرہ کیا ہے تو حکومت اس کی سخت الفاظ میں مذمت کرتی ہے اور ریاستی حکومت اس معاملے میں مناسب کارروائی کرنے کے لئے آزاد ہے۔ بہوجن سماج پارٹی کی لیڈر مایاوتی نے کہا کہ مرکزی حکومت کو اس معاملے کی صرف مذمت کرنے کے بجائے اس رہنما کے خلاف سخت کارروائی کرنی چاہئے۔
کانگریس کے دگ وجے سنگھ نے کہا کہ خود وزیر اعظم کو اس معاملے کا نوٹس لے کر مذمت کرنی چاہئے۔ سماج وادی پارٹی کی جیا بچن نے کہا کہ آپ گایوں کو تو بچا سکتے ہیں لیکن ایک خاتون وزیر اعلیٰ کی حفاظت نہیں کی جا سکتی۔ بی جے پی کی روپا گنگولی نے کہا کہ وہ بھی عورت ہے لیکن انہیں ان کے ہی ریاست میں ایک پارٹی کے 70 کارکنوں نے پیٹا، اس کا جواب کون دے گا۔ ڈپٹی چیئرمین پی جے کورین نے کہا کہ حکومت نے کہہ دیا ہے کہ اگر اس طرح کا معاملہ ہوا ہے تو ریاستی حکومت کارروائی کرنے کے لئے آزاد ہے۔ انہوں نے کہا کہ قانون ریاست کا موضوع ہے اور ریاستی حکومت کو اس معاملے میں مناسب کارروائی کرنی چاہئے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Parliament condemns bjp youth leader who offered bounty on mamata in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply