پیرا ڈائز دستاویزات میں نام آنے پر کانگریس کا وزیر مملکت جینت سنہا سے استعفے کا مطالبہ

نئی دہلی:تحقیقاتی صحافیوں کے بین الاقوامی کنسورشیم (آئی سی جے آئی) اور جرمن اخبار سودوشے زیتنگ کے اشترا ک سے پیراڈائز دستاویزات کی تحقیقات کے دوران مرکزی شہری ہوا بازی کے وزیر مملکت جینت سنہا اور بی جے پی کے راجیہ سبھا رکن آر کے سنہا کا نام آنے پر بی جے پی کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے سنہا کی کابینہ سے اور آر کے کی راجیہ سبھا سے بر طرفی اور ان کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔کانگریس مواصلات محکمہ کے سربراہ رندیپ سنگھ سرجےوالا نے پریس کانفرنس میں کہا کہ مسٹر سنہا کے نام کا انکشاف ہونے کے بعد انہیں عہدے پر فائز رہنے کا کوئی حق نہیں ہے اور ان کے خلاف فوری طور پرایف آئی آر درج ہونی چاہیے۔
انہوں نے کہا کہ مودی حکومت مسلسل بدعنوانوں کا دفاع کر رہی ہے اور انہیں لگتا ہے کہ وہ مسٹر سنہا کا دفاع کرے گی لیکن کانگریس ایسا نہیں ہونے دے گی۔انہوں نے مزید کہا کہ جینت سنہا نے الیکشن کمیشن، لوک سبھا سکریٹریٹ اور پی ایم او میں اپنے حلف نامے میں یہ اس با ت کا کوئی ذکر نہیںکیا کہ وہ ڈی لائٹ ڈیزائن مین ڈائریکٹر کے عہدے پر فائز رہ چکے ہیں۔الیکشن کمیشن کو مکمل اطلاعات فراہم نہ کرنا کیا الیکٹورل جرم نہیں ہے۔

Title: paradise papers congress demands resignation of mos jayant sinha bjp mp r k sinha | In Category: ہندوستان  ( india )

Leave a Reply