حکومت جے للتا کی موت کے معاملے کی عدالتی تحقیقات کرائے گی: نگراں وزیر اعلیٰ پنیرسیلوم

چنئی:تمل ناڈو کے نگراں وزیراعلیٰ او پنیرسیلوم نے کہا ہے کہ سابق وزیراعلیٰ جے للتا کی کی موت کے معاملے کی عدالتی تحقیقات کرائی جائے گی۔ مسٹر پنیرسیلوم نے یہاں اپنی رہائش گاہ پر صحافیوں سے کہا کہ محترمہ جے للتاکی موت کے سلسلے لوگوں میں جو شک ہے اسے دور کرنے کےلئے یہ ریاستی حکومت کی ذمہ داری ہے کہ پورے معاملے کی جانچ کرائی جائے اور اس کے پیش نظر ان کی موت کے معاملے کی قانونی جانچ کرائی جائے گی۔
قابل ذکر ہے کہ محترمہ جے للتا کا پانچ دسمبر 2016کو اپولیو اسپتال میں انتقال ہوگیا تھا جہاں وہ 75دنوں تک داخل رہی تھیں۔مسٹر پنیرسیلوم نے کہا کہ جانچ کمیشن کی تشکیل حکومت کی ذمہ داری ہے اور تحقیقات کے بعد ہی سچ سب کے سامنے آئے گا۔ جے للتا کی موت کے معاملے کی عدالتی تحقیقات کی اعلان مسٹر پنیرسیلوم نے اے آئی ڈی ایم کے کی نئی سیکرٹری جنرل وی کے ششی کلا سے بغاوت کے 12 گھنٹے بعد کیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ انہیں وزیر اعلیٰ کے عہدے سے استعفی دینے کے لیے مجبور کیا گیا تھا۔ مسٹر پنیرسیلوم نے کل دیر رات محترمہ جے للتا کی سمادھی کے سامنے 40 منٹ تک بیٹھنے کے بعد یہ انکشاف کیا کہ محترمہ ششی کلا نے انہیں استعفی دینے کیلئے مجبور کیا اور کابینہ کے کچھ ساتھیوں نے ان کی توہین کی اور ان کے ساتھ دھوکہ بھی کیا۔
انہوں نے کہا کہ انہیں سبھی مسائل سے اندھیرے میں رکھا گیا اور اتوار کو پارٹی اراکین کی جو میٹنگ بلائی گئی تھی انہیں اس بارے میں بھی معلومات نہیں تھی۔ اسی اجلاس میں محترمہ ششی کلا کو پارٹی اراکین کا لیڈر منتخب کیا گیا تھا۔ اس سے پہلے پوش گارڈن میں جب وزیر اعلیٰ کے عہدے کے لیے محترمہ ششی کلا کے نام کا مشورہ دیا گیا تو مسٹر پنیرسیلوم نے سوال کیا تھا کہ اس وقت ایسی تبدیلی کی کیا ضرورت ہے۔ مسٹر پنیرسیلوم کے ان باغی تیوروں کے پیش نظر محترمہ ششی کلا نے انہیں پارٹی کے خزانچی کے عہدے سے ہٹا دیا تھا۔ اس کے بعد محترمہ ششی کلا نے صحافیوں کو بتایا کہ مسٹر پنیرسیلوم کو پارٹی کی ابتدائی رکنیت سے بھی برخاست کیا جائے گا۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: panneerselvam says panel will be formed to probe mystery surrounding jayalalithaas death in Urdu | In Category: ہندوستان  ( india ) Urdu News

Leave a Reply