ہندوستان میں ایک لاکھ اسکول ایسے ہیں جہاں صرف ایک ٹیچرہے:وزیر فروغ انسانی وسائل

نئی دہلی:دیہی علاقوں میں کام کرنے کے سلسلے میں ٹیچروں کی عدم دلچسپی کی وجہ سے ملک کے ایک لاکھ سے زائد اسکول محض ایک، ایک ٹیچر کے بھروسے چل رہے ہیں جس کی وجہ سے دیہی علاقوں میں منتظم طریقے پر تعلیمی سرگرمیاں چلانے میں مشکل پیش آرہی ہے۔ مرکزی وزیر برائے فروغ انسانی وسائل پرکاش جاؤڈیکر نے لوک سبھا میں ضمنی سوال کے جواب میں آج یہ اطلاع دی۔
انہوں نے کہا کہ حکومت اساتذہ کی تقرری کرچکی ہے لیکن لوگ شہروں میں ہی رہنا چاہتے ہیں۔ ٹیچر گاؤں میں جانے کے لئے تیار ہی نہیں ہیں اس لئے ایک لاکھ سے زائد اسکولوں میں صرف ایک، ایک ٹیچر کے ذریعے تعلیمی سرگرمیاں چلائی جارہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پورے ملک میں 19.40 لاکھ اساتذہ کی ضرورت تھی اور حکومت 15 لاکھ سے زائد اساتذہ کی تقرری کا کام مکمل کرچکی ہے مگر ان میں سے بیشتر اساتذہ شہروں میں ہی رہنا چاہتے ہیں۔
دیہی علاقوں اور خاص طور پر دور دراز کے علاقوں میں جانے کے لئے کوئی تیار نہیں ہے۔ ایک دیگر سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ملک کے 4.5 لاکھ اسکولوں میں لڑکیوں کے لیے بیت الخلا کی تعمیر کی جاچکی ہے۔ اب کوئی بھی اسکول ایسا نہیں ہے جہاں لڑکیوں کے لئے الگ سے بیت الخلا نہ بنایا گیا ہو۔ لیکن اب اس کی تعداد میں اضافہ کرنے پر غورکیا جارہا ہے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Over 1 lakh schools in india have just 1 teacher in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply