گوا اور منی پور میں حکومت سازی کے لیے بی جے پی کی کوششوں کے خلاف لوک سبھا میں اپوزیشن کا واک آؤٹ

نئی دہلی: گوا اور منی پور میں کانگریس کے مقابلہ کم سیٹیں جیتنے کے باوجود بی جے پی حکومت کی تشکیل کے لیے کی جانے والی کوششوں کے خلاف احتجاج میں کانگریس اور اس کی قیادت والے یو پی اے اتحادیوں نے منگل کے روز لوک سبھا میں شور و غل کرتے ہوئے واک آؤٹ کیا۔ وقفہ سوالات کے دوران کانگریس ،این سی پی اور آر جے ڈی نے یہ معاملہ اٹھایا۔ ایوان میں کانگریس قانون ساز پارٹی کے قائد ملکاراجن کھرگے نے کہا کہ جمہوریت کا قتل ہو رہا ہے۔
لیکن جب اسپیکر سمترا مہاجن نے کہا کہ وہ وقفہ سوالات درہم برہم نہیں ہونے دیںگی اور یہ معاملہ وقفہ صفر میں اٹھایا جائے۔واضح رہے کہ منی پور کی 60 نشستوں میں سے 28 نشستیں حاصل کرکے کانگریس سب سے بڑی پارٹی کے طور پر ابھر کر سامنے آئی ہے جبکہ 21 نشستوں کے ساتھ بی جے پی دوسرے نمبر پر ہے۔ وزیر اعلی اوکرام ابوبی سنگھ نے کہا کہ انہوں نے گورنر نجمہ ہپت اللہ سے ملاقات کر کے ریاست میں حکومت سازی کے لئے کانگریس کو مدعو کرنے کی استدعا کی ہے۔
انہوں نے کہا کہ سب سے بڑی پارٹی ہونے کے ناطے حکومت بنانے کے لئے کانگریس کو ترجیح ملنی چاہئے۔ وہیں بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کو کانگریس سے بھلے ہی سات نشستیں کم ہو اور اکثریت کے اعداد و شمار سے 10 سیٹیں پیچھے ہے پھر بھی پارٹی تمام ممبران اسمبلی سے بات چیت کرکے حکومت تشکیل دینے کی کوشش کر رہی ہے۔ بی جے پی نے ناگا پیپلز فرنٹ (این پی ایف) اور نیشنل پیپلز پارٹی (این پی پی) کے چار۔ چار ممبران اسمبلی، ترنمول کانگریس اور لوک جن شکتی پارٹی کے ایک ایک رکن اسمبلی اور ایک آزاد ممبر اسمبلی کی حمایت کا اعلان کیا ہے۔اگر بی جے پی ان سب کی حمایت حاصل کرنے میں کامیاب ہو جاتی ہے تو وہ حکومت بنانے کا دعویٰ پیش کر سکتی ہے۔اور اگر کانگریس کو این پی پی کی حمایت مل جاتی ہے تو وہ بہ آسانی حکومت بنا لے گی ۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Oppn walkout agnst efforts to form bjp govts in goa manipur in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply