بابری مسجد مقدمہ میں مدعی ہاشم انصاری 96برس کی عمر میں انتقال کر گئے

اجودھیا:بابری مسجد معاملہ میں مدعی محمد ہاشم انصاری کا آج صبح یہاں انتقال ہو گیا۔ ان کی عمر تقریباً 96 برس تھی۔ انہوں نے علی الصبح پانچ بجے اپنی رہائش گاہ پر آخری سانس لی۔ ا ن کے پسماندگان میں ایک بیٹا ہے۔
22/23دسمبر 1949 کو متنازعہ ڈھانچے میں مبینہ طور پر رام للا کی مورتی ظاہر ہونے کے بعد فیض آباد کی عدالت میں بابری مسجد کی طرف سے مقدمہ دائر کرنے والے وہ پہلے شخص تھے۔ ‘چچا’ کے نام سے مقبول مسٹر انصاری کے انتقال کی خبر سنتے ہی ان کے گھر پر لوگوں کی بھیڑ لگنے لگی۔ طویل عرصے سے بیمار چل رہے مسٹر انصاری کے انتقال پر اجودھیا کے کئی سنتوںمہنتوں نے بھی تعزیت کا اظہار کیا۔مندر تحریک کے دوران اجودھیا میں کشیدگی کے باوجود وہ لوگوں سے امن کی ہی اپیل کرتے رہتے تھے.
انہیں ہندو اور مسلمانوں دونوں میں یکساں احترام حاصل تھا۔ رام مندر تحریک سے منسلک رہے پرم ہنس رام چندر داس کے وہ قریبی دوست تھے۔ تیرہ سال پہلے پرم ہنس کی موت پر آیا ان کا بیان ”میرا دوست مجھ سے پہلے چلا گیا“ آج بھی زباں زد عام ہے۔ان کے انتقال پر آل انڈیا اکھاڑاکونسل کے سابق صدر اور مشہور ہنومان گڑھی کے مہنت گیان داس نے غم کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مندر مسجد تنازعہ کا اتفاق رائے سے حل چاہنے والا شخص چلا گیا۔
ایک فریق کی پیروی کرنے کے باوجود مسٹر انصاری نے ہمیشہ دونوں فریقوں سے صبر و تحمل سے کام لینے کی اپیل کرتے رہتے تھے۔اترپردیش میں حکمراں سماج وادی پارٹی (ایس پی) کے صدر اور سابق وزیر اعلیٰ ملائم سنگھ یادو نے ہاشم انصاری کے انتقال پر گہرے رنج وغم کا اظہار کیا ۔
مسٹر یادو نے کہا کہ ان کے انتقال سے انھیں کافی دکھ پہنچا ہے۔ خدا ان کی روح کو سکون بخشے اور انہیں غریق رحمت کرے۔ (یو این آئی)

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Oldest litigant inbabri masjid case hashim ansari no more in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply