کشمیری انتہاپسند نوجوانوں کو جلد احساس ہوجائے گا کہ بندوق سے مسائل حل نہیں ہوتے:جنرل راوت

نئی دہلی:فوجی سربراہ جنرل بپن راوت نے کہا ہے کہ وادی کشمیر کے انتہاپسند نوجوانوں کو احساس ہوجائے گا کہ بندوق سے ان کے مسائل حل نہیں ہو سکتے۔
بندوق کے ذریعہ نہ تو فوج اور نہ ہی انتہاپسند اپنے مقصد کی تکمیل نہیں کر سکتے۔امن کی راہ پر چل کر ہی کشمیر کی صورت حال میں سدھار لایا جا سکتا ہے۔انہوںنے کہا کہ کشمیر تقریباً3عشرے سے انتہا پسندی کے دور سے گذر رہا ہے۔
نئی دہلی میںجموں و کشمیر لائٹ انفنٹری رجمنٹ کے70ویں یوم تاسیس پر اپنے خطاب میں جنرل راوت نے کہا کہ کچھ نوجوان راہ راست سے بھٹک گئے ہیں ۔جنرل راوت نے کہا کہ کشمیر میں بہت کم لوگ انتہاپسندوں کے ساتھ ہیں۔اکثریت امن سے رہنا چاہتی ہے اور خود کو ہندوستانی مانتے ہیں۔
کشمیر کی فضا میں کشیدگی ہے لیکن وہاں کی صورت حال میں گراوٹ نہیں آرہی۔انہوں نے کہا کہ کثرت میں وحدت ہی کشمیریت کی روح ہے۔ انہوںنے گذشتہ 70سال سے ملک کی بیش بہا خدمات انجام دینے پر رجمنٹ کی بھی مدح سرائی کی۔

Title: nothing can be achieved with gun gen rawat to deviated youths | In Category: ہندوستان  ( india )

Leave a Reply