غیر روادا رہندوستانی کے لیے ملک میں کوئی گنجائش نہیں : صدرجمہوریہ پرنب مکھرجی

کوچین: دہلی یونیورسٹی کے رامجس کالج میں جاری تنازعہ کے درمیان صدر پرنب مکھرجی نے یونیورسٹیوں کو مشورہ دیا کہ وہ بدامنی کے ماحول کو فروغ دینے کے بجائے منتقی بحث کی رجحان کو بڑھائیں اور ملک میں کسی عدم روادار ہندستانی کے لئے کوئی جگہ نہیں ہونی چاہئے۔ جمعرات کے روز کیرل کے شہرکوچین میں کے ایس راجامونی میموریل لیکچر کے دوران اپنے خطاب میں مسٹر مکھرجی نے کہا کہ ملک کی مختلف یونیورسٹیوں کو اپنے احاطے میں بدامنی کے ماحول کو فروغ دینے کے بجائے منطقی بحث کو فروغ دینا چاہئے۔
مسٹر مکھرجی نے کہا کہ قومی مقاصد اور حب الوطنی کے جذبے کو فروغ دے کر ہی ہم اپنے ملک کو مسلسل ترقی اور خوشحالی کی راہ پر لے جا سکتے ہیں۔ صدر نے ہم وطنوں سے ملک کی کثیر و تنوع ثقافت اور مختلف حالتوں کو مزید مضبوط بنانے کی کوشش کرنے کی اپیل کی۔ دہلی یونیورسٹی کے رامجس کالج میں حریف طالب علم ایسوسی ایشن اے بی وی پی اور آل انڈیا اسٹوڈنٹس ایسوسی ایشن(اے آئی ایس اے) کے درمیان جاری کشیدگی پر صدر نے کہا کہ علم کے ان مندروں میں آزاد نقطہ نظر اور سوچ کے علاوہ تخلیق کا ماحول ہونا چاہئے۔
خیال ر ہے کہ رامجس کالج کے ایک پروگرام میں جے این یو کے متنازعہ طالب علم عمر خالد اور جے این یو طالب علم یونین کی لیڈر شہلا راشد کو مدعو کرنے والے منتظمین کے ساتھ اے بی وی پی نے مارپیٹ کی تھی جس کے بعد وہاں طلبا کے دو گروپوں کے درمیان تصادم ہوگیا تھا۔ لیفٹ حامی طالب علم تنظیم اے آئی ایس اے کا الزام ہے کہ مار پیٹ اے بی وی پی کے کارکنوں نے کی جبکہ اے بی وی پی نے اس الزام کو غلط بتایا ہے۔ قابل ذکر ہے کہ گذشتہ برس جے این یو کے چند طلبا کے خلاف ملک مخالف نعرے لگانے پر پولیس نے ملک سے بغاوت کے معاملے درج کئے تھے۔
جے این یو اور دہلی یونیورسٹی کو دیئے گئے اپنے پیغام میں مسٹر مکھرجی نے کہا کہ یونیورسٹیوں کو اپنے احاطے میں بدامنی کے ماحول کو فروغ دینے کے بجائے منطقی بحث کو فروغ دینا چاہئے۔ صدر نے دہلی یونیورسٹی میں دو گروپوں کے درمیان ہوئے تشدد کو افسوسناک قرار دیا ہے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: No room for intolerant indian says president pranab mukherjee in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply