ہم اندرا گاندھی جیسی سیاست کرتے ہیں نہ اس کے قائل ہیں: امیت شاہ

لکھنؤ: گجرات، بہار اور اترپردیش کے سیاسی واقعات پر بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) پر اٹھ رہی انگلیوں کے درمیان پارٹی کے صدر امت شاہ نے کہاکہ ان کی پارٹی یا حکومت اندراگاندھی کے طرز کی سیاست نہیں کرتی۔ تین روزہ لکھنؤ دورہ کے آخری دن آج مسٹر شاہ نے نامہ نگاروں سے کہاکہ اگر کوئی بی جے پی شامل ہونا چاہتا ہے یا اتحاد کرکے حکومت بنانا چاہتا ہے تو پارٹی اسے کیوں روکے گی۔ اپنی مرضی سے کوئی ملنا چاہتا ہے تو اس کا خیرمقدم ہے لیکن ایک بات طے ہے کہ بی جے پی یا اس کی حکومتیں اندراگاندھی کے طرز کی سیاست نہیں کرتیں۔
بہار میں آئی سیاسی تبدیلی میں مسٹر نتیش کمار کی حمایت کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ مسٹر کمار نے کسی کو کابینہ سے نکالا نہیں اور نہہی کوئی پارٹی توڑی۔ انہوں نے خود اتحاد سے الگ ہوکر بی جے پی سے ناطہ جوڑا۔ اس میں بی جے پی یا نتیش کمار کہاں غلط ہوگئے۔ گجرات میں کانگریس اراکین اسمبلی کو لالچ دینے کے الزامات کو بی جے پی صدر نے بے بنیاد قرار دیتے ہوئے سوال کیا کہ بنگلور میں کانگریس کی حکومت ہے وہاں اراکین اسمبلی کو کمرے میں کیوں رکھا گیا۔ گھومنے کیوں نہیں دیا جارہا ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ وہ اگر راجیہ سبھا کے لیے منتخب ہوجاتے ہیں توبھی وہ پارٹی صدارت سے مستعفی نہیںہوںگے۔پارٹی صدارت چھوڑنے کا کوئیسوال نہیں پیدا ہوتا وہ اس عہدے پر بہت مگن اور خوش ہیں اور صدق دلی سے پارٹی کا کام دیکھ رہے ہیں۔

Title: no question of quitting as bjp president says amit shah | In Category: ہندوستان  ( india )

Leave a Reply