ایک لڑکی سے دوبارہ اجتماعی جنسی زیادتی کی واردات پرانسانی حقوق کمیشن کا ہریانہ حکومت کو نوٹس

نئی دہلی: قومی انسانی حقوق کمیشن نے ہریانہ کے روہتک ضلع میں ایک لڑکی کی پانچ لوگوں کے ذریعہ تین برس بعد پھر اجتماعی عصمت دری کئے جانے کے معاملے میں ریاست کے چیف سکریٹری اور پولیس ڈائریکٹر جنرل کو نوٹس جاری کرکے رپورٹ طلب کی ہے۔
کمیشن نے میڈیا رپورٹوں کی بنیاد پر اس معاملے کا خود سے نوٹس لیتے ہوئے کہا کہ ان پانچوں لوگوں پر 2013 میں اجتماعی عصمت دری کے الزام میں مقدمہ چل رہا ہے۔ ان میں سے دو ضمانت پر رہا ہیں جبکہ تین دیگر پولیس کی گرفت میں نہیں آسکے ہیں۔متاثرہ کنبہ نے پولیس سے ضمانت پر رہا دونوں ملزمین اور ان کے تین دیگر ساتھیوں کو گرفتار کرنے کے لئے عدالت میں مقدمہ دائر کیا ہوا ہے۔
کمیشن کے مطابق تمام ملزم متاثرہ کنبہ پر عدالت سے باہر سمجھوتہ کرنے کے لئے دباو¿ ڈال رہے تھے لیکن اس میں کامیابی نہ ملنے پر انہوں نے گذشتہ 15 جولائی کو کالج کے قریب سے اس لڑکی کو اغوا کر لیا اور اس کی پھر اجتماعی عصمت دری کر کے اسے بیہوشی کی حالت میں سڑک پر پھینک کر فرار ہوگئے۔
راہگیروں نے لڑکی کو اسپتال میں داخل کرایا۔ کمیشن نے کہا کہ اگر میڈیا میں آئی رپورٹ صحیح ہے تو یہ افسوسناک صورت حال ہے اور ریاست میں امن و قانون کی صورت حال کی سنگین تصویر پیش کرتی ہے۔ اس سے یہ بھی پتہ چلتا ہے کہ سرکاری مشینری خواتین کو مناسب سیکورٹی فراہم کرنے میں ناکام رہی ہے۔
اس نے چیف سکریٹری اور پولیس ڈائریکٹر جنرل کو نوٹس جاری کر کے چار ہفتوں میں اسٹیٹس رپورٹ دینے کے لئے کہا ہے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Nhrc issues notice to haryana in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply