نئی قومی تعلیمی پالیسی میں اقلیتی طبقوں کا خیال رکھا جائے گا: جاوڈیکر

نئی دہلی:نسانی وسائل کی ترقی کے وزیر پرکاش جاودیکر نے آج راجیہ سبھا میں یقین دہانی کرائی کہ نئی قومی تعلیمی پالیسی میں آئین کی خلاف ورزی نہیں ہوگی اور اس میں اقلیتی طبقوں کے مفادات کا خیال رکھا جائے گا۔
ڈپٹی چیئرمین پی جے کورئین نے صبح قانون سازی کے کام نمٹانے کے بعد جب وقفہ صفر شروع کرنے کی کوشش کی تو ڈی ایم کے کی کنی موزی اپنی سیٹ پر کھڑی ہو گئیں اور ایوان میں نئی قومی تعلیمی پالیسی کی شکل و صورت پر بحث جاری کرانے کا مطالبہ کیا۔ ان کی اس مانگ کی کئی اراکین نے حمایت کی۔اس پر مسٹر کورین نے کہا کہ اس معاملے پر بحث جاری رہے گی اور وقت ملنے پر پھر شروع کی جائے گی۔
اس پر مسٹر جاوڈیکر نے کہا کہ نئی قومی تعلیمی پالیسی کو تیار کرنے میں سب کا تعاون لیا جائے گا اور صلاح و مشورہ دینے کی تاریخ 15 ستمبر تک بڑھا دی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ تمام اراکین اپنی تجاویز بھیج سکتے ہیں اور سب کے خیالات کا خیال رکھا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ نئی پالیسی میں آئین کی خلاف ورزی نہیں ہوگی اور اقلیتوں کے مفادات کو ٹھیس نہیں پہنچے گی۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: New education policy govt to accept suggestions till sept 15 in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply