میری کیا مجال کہ راہل گاندھی کی آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر بات کر سکوں: وزیر اعظم مودی

نئی دہلی:لوک سبھا میں وزیر اعظم نریندر مودی حکومت نے اعتماد کا ووٹ حاصل کر لیا۔ عدم اعتماد تحریک پر بحث کا جواب دیتے ہوئے وزیر اعظم نے اپنے90منٹ کے جواب میں حزب اختلاف کے ہر سوال کا جواب دیا اور کانگریس صدر راہل گاندھی کو کئی مشورے بھی دیے۔وزیر اعظم کے جواب کے بعد ووٹنگ ہوئی او ر 451اراکین نے ووٹنگ میں حسہ لیا۔جس میں حکومت کی موافقت میں325اور مخالفت میں126ووٹ پڑے۔

جہاں ایک جانب نتیجہ توقع کے مطابق بر آمد ہوا وہیں وزیر اعظم نریندر مودی نے تحریک پر ہوئی بحث کے اختتام پر نہ صرف حزب اختلاف کے ایک ایک لیڈر کو جاب دیا بلکہ اپنی کچھ چبھتے ہوئے جملوں سے حزب اختلاف کی جماعتوں کو متحد ہونے سے پہلے ہی اتحاد کے لیے ہزاروں بار سوچنے پر مجبور کر دیا۔ یہی نہیں بلکہ فن خطابت کو بھی ایسا مظاہرہ کیا کہ ایک بار پھر ان کے ناقدین اور مخالفین کو بھی یہ تسلم کرنے پر مجبور ہونا پڑا ہوگا کہ ایک مقرر کے طور پر ان کا کوئی ثانی نہیں ہے۔

انہوں نے کانگریس صدر راہل گاندھی کے اس جملے کا کہ وہ ان سے نظریں ملا کر بات نہیںکر سکتے یہ جواب دےکر انہیں لاجواب کر دیا کہ راہل درست کہہ رہے ہیں کیونکہ ایک غریب ماں کا پسماندہ ذات کا بیٹا کسی ایسے شخص سے آنکھ سے آنکھ ملا کر کیسے بات کر سکتا ہے جو کسی موروثی سلطنت کا چشم و چراغ ہو۔

ان کے کہنے کا مقصد یہ تھا کہ کہاں راجہ بھوگ اور کہاں گنگو تیلی۔وزیر اعظم نے مزید کہا کہ جب کسی نے بھی خوا وہ سبھاش چندر بوس رہے ہوں یا مرارجی ڈیسائی، جے پرکاش نرائن، چدھری چرن سنگھ ، چندر شیکھر یا ایچ ڈی دیوے گوڑا ، اس خاندان کے کسی حکمراں سے آنکھ سے آنکھ ملا کر بات کرنے کی کوشش کی تو اس کا جو حشر ہوا اس سے ایک دنیا واقف ہے۔حتیٰ کہ کانگریس کے ہی معمر اور ذی اثر شرد پوار اور پرنب مکھرجی کو آنکھوں میں آنکھ ڈال کر بات کرنا مہنگا پڑا۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Narendra modi gives rahul gandhi oratory lesson in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply