مسلم پرسنل لا بورڈ نے یکساں سول کوڈ کے خلاف پانچ کروڑ دستخط کے ساتھ میمورنڈم لا کمیشن کو دیا

نئی دہلی:آل انڈیا مسلم پرسنل لابورڈ نے شر یعت کی حمایت اور یونیفارم سول کوڈ کی مخالفت کرنے والے پانچ کروڑ افراد کے دستخط پر مشتمل ایک میمورنڈم لاکمیشن آف انڈیا کو پیش کیا اور شرعی معاملات میں حکومت کی دراندازی ناقابل قبول ہے، مذہبی آزادی مسلمانوں کا آئینی حق ہے، اور یونیفارم سول کوڈ کسی درجہ میں پسند نہیں۔
آل انڈیا مسلم پرسنل لابورڈ کا ایک اعلی سطحی وفد بورڈ کے جنرل سکریٹری حضرت مولانا محمد ولی رحمانی کی قیادت میں آج لا کمیشن آف انڈیا کے چیرمین جسٹس بلبیر سنگھ چوہان سے ملا۔ اس وفد نے چیرمین لا کمیشن کے سامنے مسلم پرسنل لا بورڈ کی طرف سے ملک گیر پیمانے پر چلائی گئی دستخطی مہم کی تفصیلات کی کاپی پیش کیں جو شریعت کی حمایت میں ہیں اور یونیفارم سول کوڈ کی مخالفت کرتے ہیں اس ملک میں، اس کی پوری تفصیلات فراہم کرنے کے لئے بورڈ کا یہ وفد ان سے ملا۔ وفد نے بتایا کہ ہندوستان کا آئین اس ملک کے تمام مذاہب کو اپنے مذہبی معاملات میں عمل کرنے کی مکمل آزادی دیتا ہے اور یہ صاف طور پر کہا کہ مسلمان شرعی قوانین میں کوئی تبدیلی یا بدلاؤ نہیں چاہتے اور ہر حال میں شرعی قوانین کے ساتھ رہنا چاہتے ہیں اور یہ چاہتے ہیں کہ حکومت شرعی معاملات میں دخل اندازی نہ کرے۔
شرعی معاملات میں حکومت کی دراندازی ناقابل قبول ہے، مذہبی آزادی ہمارا آئینی حق ہے، اور یونیفارم سول کوڈ ہمیں کسی درجہ میں پسند نہیں۔ اس لئے لا کمیشن سے گذارش ہے کہ وہ ایسی کوئی سفارش نہ کرے جو مسلمانوں کے واضح آئینی حقوق کے خلاف ہو۔ کیوں کہ مسلمانوں کو اپنے آئین اور قانون کی دفعات 25,26اور29کے تحت اپنے مسلک اور مذہب پر زندگی گزارنے کا پورا حق ہے۔
بورڈ نے بتایا کہ پورے ملک کے تمام صوبوں سے 4,83,47,596دستخط اسکی حمایت میں موصول ہوئے جسمیں2,73,56,934 خواتین نے اور 2,09,90,662 مردوں نے شریعت کی حمایت میں دستخط کئے ہیں اور یونیفارم سول کوڈ کی مخالفت میں اپنی رائے ظاہر کی ہیں۔ اس وفد نے ان تمام دستخطی مہم کی تفصیلات کے ساتھ ایک ہارڈ ڈسک بھی چیرمین لا کمیشن کو پیش کی۔ اس وفد میں مولانا محمد ولی رحمانی کے علاوہ مولانا محمد فضل الرحیم مجددی ،مولانا سید محمود اسعد مدنی ،مولانا محمد علی محسن تقوی ،مولانا توقیر احمد رضا خان،ڈاکٹر اسمائ زہرہ ،محترمہ نگہت پروین خان،محترمہ ممدوحہ ماجد ، ایم آر شمشاد ایڈوکیٹ،مولانا عبدالوہاب خلجی، نیاز فاروقی ایڈوکیٹ ،مولانا محمد احمد ،ڈاکٹر سید قاسم رسول الیاس، شکیل احمد سید ایڈوکیٹ ،ڈاکٹر محمد وقارالدین لطیفی ،احتشام رحمانی اور فہد عباسی شامل تھے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Muslim personal law board give memorandum to law commision with 5 crore signature in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply