مدھیہ پردیش کے وزیر داخلہ نے پولس فائرنگ میں پانچ کسانوں کی ہلاکت کا اعتراف کر لیا

بھوپال:مدھیہ پردیشکے وزیر داخلہ بھوپیندر سنگھ نے آج اعترف کیا کہ مندسور ضلع کے پپلیامنڈی میں پولیس فائرنگ میں ہی کسانوں کی موت ہوئی ہے۔ مسٹر سنگھ نے یہاں میڈیا سے کہا کہ معاملے کی ابتدائی تحقیقات کے بعد حکومت اس نتیجہ پر پہنچی ہے کہ منگل کے روز پولیس نے فائرنگ کی تھی اور اسی میں گولیاں لگنے سے پانچ کسان ہلاک اور دیگر شدید طورپر زخمی ہوئے ۔ مسٹر سنگھ نے منگل کو واقعہ کے فوراً بعد کہا تھا کہ پپلیامنڈی میں کسانوں کی موت پولیس کے گولیاں چلانے سے نہیں ہوئی ہے۔
تحقیقات کے بعد ہی معلوم ہو سکے گاکہ فائرنگ کس نے کی ۔ ریاستی پولیس ہیڈکوارٹر کے ذرائع نے بتایا کہ مندسور ضلع ہیڈکوارٹر سے تقریباً 20کلومیٹر دور پپلیا منڈی اور آس پاس کے علاقوں میں پیر کو کسان تحریک کے دوران فسادیوں نے جم کر تشدد،لوٹ مار اور آتش زنی کی تھی۔اس کے بعد منگل کو بھی اسی قسم کی صورت حال دیکھ کر مرکزی ریزرو پولیس فورس(سی آر پی ایف)کے جوانوں کو تعینات کر دیا گیا تھا۔ حکام کے مطابق اس دوران پولیس اور مظاہرین میں زبردست ٹھن گئی اور فائرنگ کر دی گئی ۔بتایا گیا ہے کہ پہلی بار سی آر پی ایف کے جوانوں کی فائرنگ میں ایک شخص کی موت ہوگئی تھی۔
اس کے بعد فسادی اور مشتعل ہوگئے اور انہوں نے پولیس کے جوانوں کا محاصرہ کرنے کے ساتھ ہی عوامی املاک کو نقصان پہنچانا شروع کردیا۔پولیس نے بچنے کےلئے پھرسے گولیاں چلائیں۔اس طرح دو بار کی فائرنگ میں پانچ افراد کی موت ہوگئی اور دو دیگر زخمی ہوگئے۔ایک دیگر شخص کی موت حرکت قلب رکنے سے ہوئی۔ ریاست میں ایک ہفتے سے جاری کسان تحریک کے دوران تین دنوں سے یہاں ماحول بے حد پرتشدد ہوگیا ہے۔کل تشدد پر آمادہ ہجوم نے مسافربسوں اور عام لوگوں کی گاڑیوں کو بھی نشانہ بنایا۔تشدد کے واقعات مندسور،نیمچ،دیواس،سیہور،دھار اور دیگر اضلاع میں سب سے زیادہ پیش آئے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Mp home minister accepts farmers died in police firing in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply