ہریانہ میں ایک اور نابالغ بچی سے اجتماعی جنسی زیادتی ، تینوں نامزد ملزم فرار

پانی پت: ہریانہ کے پانی پت میں ایک شرمناک معاملہ سامنے آیا ہے جس میں ایک لڑکی نے ہی اپنی نابالغ سہلی کو تین نوجوانوں کے حوالے کر دیا ۔ان تینوں نے اس سے اجتماعی جنسی زیادتی کی اور دھمکی دی کہ اگر اس نے کسی کو بھی اس حوالے سے کچھ بتایا تو اسے جان سے مار دیا جائے گا۔لیکن اس بچی نے گھر پہنچ کر اپنے گھروالوںکو ساری روداد گوش گذار کر دی۔ بچی کے گھر والوں کی جانب سے رپورٹ درج کرائے جانے کے بعد پولس نے کارروائی کرتے ہوئے تینوں کے خلاف پوکسو قانون کے تحت معاملہ در ج کر لیا۔ تینوں ملزم فرار ہیں۔ دوسری جانب بچی کے والد نے الزام لگایاکہ پولس دس لاکھ روپے کے عوض معاملہ رفع دفع کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔یہ واردات پانی پت کی ہے جہاں ایک لڑکی اپنی نابالغ سہیلی کو بہانے سے بلا کر ایکھ میں لے گئی ۔گنے کے اس کھیت میں پہلے ہی سے تین لڑکے موجود تھے۔وہ لڑکی اپنی سہیلی کو وہاںچھوڑ کر چلی گئی۔اور ان تینوں نے اس سے ریپ کیا۔ گھر پہنچنے پر جب اس کے گھر والوں کو ساری بات کا علم ہوا تو وہ اسے طبی معائنہ کے لیے لے گئے لیکن ڈاکٹر نے میڈیکل کرنے سے انکار کر دیا۔آخر کئی گھنٹے کے بعد ممبر اسمبلی کی مداخلت کے بعد اس کا کیس درج کیا گیا۔اس معاملہ میں پولس نے تینوں ملزموں جنید، صابر اور کلیم کےخلاف پوکسو قانون کے تحت معاملہ درج کر لیا۔اس لڑکی کو بہلا پھسلا کر اپنے ساتھ لے جانے والی لڑکی کے معاملے کی بھی تحقیقات کی جارہی ہے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Minor girl gangrape in panipat of haryana in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News
Tags:

Leave a Reply