دہلی میں کسان گھاٹ پہنچنے کے بعد کسانوں کی تحریک ختم

نئی دہلی:ملک کے دارالسلطنت دہلی میں منگل کے روز اپنے مطالبات پر زور ڈالنے کے لیے راجگھاٹ آنے والے جن ہزاروں کاشتکاروں کو دہلی کی سرحد پر ہی روک دیا گیا تھا انہیں منگل اور بدھ کی درمیانی شب دہلی میں داخل ہونے کی اجازت دے دی گئی ۔

اور یہ کسان دہلی میں سابق وزیر اعظم چودھری چرن سنگھ کی سمادھی کسان گھاٹ پہنچ گئے اور اس کے ساتھ ہی کسان لیڈر نریش ٹکیت نے اترا کھنڈ کے ہری دوار سے 23ستمبر سے کسان کرانتی یاترا کے عنوان سے شروع ہونے والی دس روزہ پد یاترا ختم ہونے کا بھی اعلان کر دیا۔کسانوں نے کہا کہ ان کا مرکز کے ساتھ معاہدہ ہو گیا اور اس نے ہمارے بیشتر مطالبات تسلیم کر لیے۔انہوں نے کہا کہ حکومت نے فصلوں کے قیمت بڑھانے کا ان کا اصل مطالبہ مان لیا ہے اسلیے اب انہوں نے گھر واپسی شروع کر دی ہے۔

واضح ہو کہ دہلی آنے والی قومی شاہراہ مغربی اترپردیش کے علاوہ مشرقی اترپردیش کے گونڈہ ،بستی اور گورکھپور جیسے دور دراز علاقوں تک سے آنے والے ہزاروں کسانوں سے اٹی پڑی تھی۔ہپولس نے انہیں دہلی یوپی بارڈر پر ہی روک دیا تھااور انہیں منتشر کرنے کے لیے اشک آور گولے اور پانی کی بوچھاریں ماریں اور لاٹھی چارج کیا جس میں کئی کسان زخمی ہوگئے۔ قبل ازیںپولیس نے دہلی یو پی بارڈر پر غازی آباد کی جانب سے دہلی میں داخل ہونے کے زیادہ تر راستوں کو بند کردیا اور جہاں آمدورفت کی اجازت دی گئی وہاں زبردست حفاظتی بندوبست کیا گیا تھا ۔قومی شاہراہ نمبر 24سے گاڑیوں کی آمدورفت پوری طرح سے بند کر دی گئی تھی۔

جس کے باعث آنند وہار سے دہلی کے مختلف مقامات پر جانے والی دہلی ٹرانسپورٹ کارپوریشن کی بسوں کوبھی ان راستوں پر نہیں چلنے دیا گیا۔سیما پوری بارڈر پر بھی پولیس کا سخت پہرا رہا اور مشرقی دہلی میں دفعہ144نافذ کر دی گئی ۔کسانوں کا پیدل مارچ اترا کھنڈ کے ہری دوار سے ہوا ۔کاشتکاروں کا مطالبہ تھا کہ سوامی ناتھن کمیٹی کے فارمولے کی بنیاد پر ان کی آمدنی طے ہو۔کسانوں کا پورا قرضہ معاف کیا جائے۔

کسان کریڈٹ کارڈ یوجنا میں بلاسودی قرضہ ملے۔ کسانوں کو پنشن بھی دی جائے۔گنے کی ادائیگی 14روز کے اندر کی جائے۔دہلی کے آس پاس کے علاقوں کے کسان ٹریکٹر ٹرالی کے ذریعہ منڈی تک اپنی فصل لاتے ہیں ا س لیے ان کا مطالبہ ہے کہ دس سال پرانے ٹریکٹروں پر پابندی کا حکم واپس لیا جائے۔کمرشیل استعمال میں آنے والی چینی کی کم از کم قیمت 40روپے فی کلو مقرر کی جائے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Midnight ending in delhi for farmers march after standoff with police in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply