ٹھاکر سینا کی دھمکیوں کے بعد گجرات سے اترپردیش و بہار کے لوگوں کی وسیع پیمانے پرنقل مکانی

گاندھی نگر:گجرات کے سابر کانٹھا ضلع میں ایک سوا سال کی بچی کے ساتھ ریپ کی واردات کے بعد گجرات کے بیشتر علاقوں خاص طور پرجہاں غیر گجراتیوں کی اکثریت ہے بہار اور اتر پردیش کے لوگوں پر حملوں میں اتوار کے روز مزید شدت آگئی ۔

جس سے خوفزدہ ہو کر غیر گجراتیوں نے اور بھی تیزی کے ساتھ بیوی بچوں سمیت گجرات سے نقل مکانی شروع کر دی اور پہلی فرصت میں گجرات سے باہر جانے والی دستیاب پہلی سواری سے اپنے آبائی شہروں کو روانہ شروع کر دیا۔

ان میں زیادہ تر لوگ سابر کانٹھا، مہسانہ، ارولی، گاندھی نگر اور سریندر نگر علاقے ہیں۔ٹھاکر سینا کے لوگوں نے اس گاؤں کے ،جہاں کی یہ بچی رہائشی تھی،آس پاس کے دیہات میں رہنے والوں کو جان سے مارنے کی دھمکیاں دیتے ہوئے ان کے مکانوں اور دکانوں میں توڑ پھوڑ اور آتشزنی کی وارداتیں شروع کر دیں۔مدھیہ پردیش کے بھنڈ کا رہائشی ایک چاٹ فروش اپنے اہل و عیال کے ساتھ گذشتہ دس سال سے گجرات کے کڑی میں رہائش پذیر ہے۔

وہ گول گپے(پانی پوری) کا خوانچہ لگا تا ہے اور اسی سے ان کی گذر بسر ہوتی ہے۔لیکن دو روز پہلے اچانک کچھ لوگ آئے اوراس کے گول گپے کی ریڑھی پلٹ دی اور اسی پر اکتفا نہیں کیا بلکہ دھمکی بھی دی کہ یہاں سے نکل جاؤ ورنہ زندہ نہیں بچو گے۔

مجموعی اعتبار سے اب حالات اتنے خراب ہو گئے ہیں کہ احمد آباد میں بھی پرتشدد وارداتیں شروع ہو گئیں اور وہاں کے میگھانی نگر سے روزانہ80تا90بسوں کے ذریعہ غیر گجراتی نقل مکانی کر رہے ہیں۔

ایک رکشہ پلر پر بھی حملہ کر کے اس کا رکشہ توڑ پھوڑ دیا۔ تشدد کے اب تک 42کیس درج اور345افراد گرفتار کیے جاچکے ہیں۔تمام متاثرہ اضلاع میں 17کمپنی اور ایک پلٹن ایس آر پی تعینات کر دی گئی ہے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Mass exodus of bihar up people from gujarat following threats by thakor sena in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply