کلبھوشن کی والدہ و بیوی سے بدسلوکی کے خلاف ہندو پریشد و بجرنگ دل کا احتجاج، پاکستانی پرچم جلایا

نئی دہلی:جمعرات کے روز لوک سبھا اور راجیہ سبھا میں وزیر خارجہ سشما سوراج کے اس بیان کے بعد کہ کہ پاکستان نے ہندوستانی قیدی کلبھوشن جادھو کی والدہ اور اہلیہ کو بیوی کے طور پر پیش کیا اور سلامتی کے نام پران کے کپڑے بدلوائے اور انہیں ساڑھی کی جگہ شلوار کرتاپہننے اور دونوں کی بندی، منگل سوتر اور چوڑیاں بھی اتروا دیں،شدید ردعمل ظاہر کرتے ہوئے منگلور میں بجرنگ دل اور وشو ہندو پریشد نے جمعہ کو قادری ملیکاتے میں زبردست احتجاج کیا۔
احتجاجیوں سے خطاب کرتے ہوئے ہندو پریشد کے ڈسٹرکٹ صدر جگدیش شینوا نے کہا کہ کلبھوشن جادھو کے کنبہ والوں کے ساتھ جو بدسلوکی کی گئی ہے وہ ناقابل برداشت ہے اور ہم اس کی شدید مذمت کرتے ہیں۔ دونوں جماعتوں کے کارکنوں نے پاکستان مخالف نعرے لگائے اور پاکستانی پرچم نذر آتش کیا۔واضح رہے کہ جادھو کی بیوی و والدہ کا منگل سوتر بھی اترا دیے گئے تھے۔جادھو کی ماں نے اگرچہ یہ کہہ کر منگل سوتر اتارنے کی مخالفت کی کہ یہ ان کے سہاگ کی نشانی ہے اسے گلے میں پڑا رہنے دیا جائے۔
لیکن حکام نہیں مانے اور کہا کہ انہیں اوپر سے ہی ایسا کرنے کا حکم ملا ہے۔سشما نے بتایا کہ جادھو سے ملاقات کے لیے ان کی ماں اور بیوی کو عقبی دروازے سے لے جایا گیا ۔ان کے ساتھ جانے والے سفارت کارجے پی سنگھ کے پہنچنے سے پہلے ہی یہ سب ہوا اور جب مسٹر سنگھ نے حکام سے ان دونوں خواتین کے بارے میں معلوم کیا توانہیں بتایا گیا کہ انہیں ملاقات کے لیے پہلے ہی بھیجا جا چکا ہے۔ بعد میں مسٹر سنگھ کو بھی لے جایا گیا۔

Title: mangaluru vhp bajrang dal burn pak flag condemn insult of kulbhushan jadhavs kin in Urdu | In Category: ہندوستان  ( india ) Urdu News

Leave a Reply