بہار کے ایک مسلم نوجوان نے8سالہ ہندو بچے کو خون دینے کے لیے روزہ توڑ دیا

گوپال گنج(بہار) : ایک مسلم نوجوان نے ایک 8سالہ غیر مسلم بچے کی جان بچانے کے لیے روزے کی حالت میں خون کا عطیہ دے کر انسانیت اور بھائی چارے کی شاندا ر پیش کی ۔

واقعہ یوں بتایا جاتا ہے ہ گوپال گنج کا 8سالہ پونیت تھلاسیمیا مرض میں مبتلا تھا اور منگل کے روز اس کے جسم میں ہومو گلوبین کی مقدار خطرناک حد تک کم ہو گئی اور اسے فوری طور پر خون چڑھانے کی ضرورت تھی۔لیکن اسپتال کے بلڈ بینک میں گروپ اے پلس خون نہیں تھا ۔اس کے رشتہ داروں کا بھی بلڈ گروپ اے پلس نہیں تھا ۔پونیت کے والد بھوپندر کمار کو ایک بلڈ بینک سوسائٹی کا پتہ بتا کر وہاں بھیجا گیا۔

بھوپندر ڈسٹرکٹ بلڈ ڈانر ٹیم کے ایک رکن انور حسین سے ملا اس نے اپنے ساتھی رکن جاوید عالم سے، جس کا بلڈ گروپ اے پلس تھا، بات کی۔وہ فوراً اسپتال پہنچا ۔لیکن وہاں کے عملہ نے اس سے کہا کہ چونکہ وہ روزے سے ہے اس لیے اس کا خون نہیں لیا جا سکتا۔لیکن جاوید نے اسے خون دینے کے لیے روزہ توڑ دیا۔

اس ضمن میں ٹائمز آف انڈیا نے جب امارت شرعیہ بہار سے رابطہ کر کے مسئلہ معلوم کیا تو امارت کے جنرل سکریٹری انیس الرحمٰن قاسمی نے بتایا کہ روزہ خون کا عطیہ دینے سے نہیں ٹوٹتا کیونکہ جسم کے اندر سے وئی چیز باہر آرہی ہے۔

باہر سے کوئی چیز جسم میں پہنچائے جانے سے روزہ ٹوٹتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ خون کا عطیہ دینے والے اس لیے اکثر روزہ توڑ دیتے ہیں کہ جب وہ خون کا عطیہ دیتے ہیں تو انہیں فوری طور پر طاقت کے لیے کوئی مشروب پینے دیا جاتا ہے۔اگر وہ مشروب نہ پئیں اور صرف خون کا عطیہ دینے تک ہی معاملہ رہے تو روزہ برقرار رہتا ہے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Man breaks fast to donate blood for 8 yr old in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply