الہٰ آباد ہائی کورٹ سے گاندھی کنبہ کو راحت

امیٹھی:الہٰ آباد ہائی کورٹ کی لکھنؤ ڈویڑن بنچ نے ووکیشنل ٹریننگ مرکز چلانے کیلئے راجیو گاندھی چیریٹبل ٹرسٹ کے قبضہ والی زمین خالی کرانے کی انتظامی کارروائی پر حکم امتناعی جاری کرتے ہوئے گاندھی کنبہ کو بڑی راحت دی ہے۔ جسٹس ایس این شکلا اور جسٹس ایس کے سنگھ کی عدلات نے امیٹھی ضلع انتظامیہ کے 22 اپریل کے جیسل میں اراضی خالی کرنے کے حکم پر روک لگا دی۔ عدالت نے جولائی کے وسط میں معاملے کی اگلی سماعت طے کی ہے، جس کے تحت ضلع انتظامیہ کو اس وقت کے معاملے میں جواب دینے کی ہدایت دی گئی تھی۔
عدالت نے کہاکہ اگلی سماعت تک ضلع انتظامیہ کو اس معاملہ میں مداخلت نہیں کرنی چاہئے۔ راجیو گاندھی چیریٹبل ٹرسٹ کی جانب سے چلائے جانے والے جیسل میں ووکیشنل ٹریننگ مرکز کے معاملے میں مرکزی وزیر اسمرتی ایرانی اور کچھ دیگر لیڈروں نے کانگریس کو نجی استعمال کیلئے سرکاری زمین پر قبضہ کرنے کو چیلنج کیا تھا۔ انہوں نے یہ بھی مطالبہ کیا تھا کہ زمین کو ٹرسٹ سے واپس لیا جانا چاہئے۔ .ٹرسٹ کی جانب سے حاضر سینئر وکیل سی بی پانڈے نے کہا کہ عدالت نے امیٹھی کے حکام کو اس معاملے میں مداخلت نہ کرنے کا واضح حکم دیا تھا اور معاملےکی سماعت جولائی کے آخری دو ہفتوں میں کرنے کیلئے کہا ہے۔
تلوئی تحصیل کے ڈپٹی جیوڈیشئل مجسٹریٹ کے 22 اپریل کو ٹرسٹ کی جانب سے 1.0360 ہیکٹئر میں ایک ماہ کے اندر ووکیشنل ٹریننگ سنٹر کو خالی کرنے کے ایک حکم کے بعد ٹرسٹ نے عدالت میں ایک عرضی داخل کی۔ عرضی گزار نے درخواست کی کہ ٹریننگ سنٹر خواتین کو خودکفیل بنانے کے میدان میں ان کی مدد کر رہا ہے اس لئے وہ اس جگہ پر بنے رہنا چاہتا ہے۔

Title: major relief to the gandhi family from allahabad high court | In Category: ہندوستان  ( india )

Leave a Reply