مدراس ہائی کورٹ نے جے للتاکے اثاثہ جات قومیائے جانے کی عرضی خارج کر دی

مدورئی:مدراس ہائی کورٹ کی مدورئی بنچ نے مفاد عامہ کی وہ عرضی خارج کر دی جس میں آنجہانی وزیر اعلیٰ جے للتا کی تمام جائیداد کو قومیائے جانے اور اس کے لئے ہائی کورٹ کے سابق جج کو ایڈمنسٹریٹر مقرر کرنے کے معاملے میں مرکز اور ریاستی حکومت کو ہدایات جاری کرنے کی درخواست کی گئی تھی۔ مدورئی واقع ایک غیر سرکاری تنظیم ‘تمل ناڈو سینٹر فار پبلک اٹریسٹ لٹگیشن کے منیجنگ ٹرسٹی کے کے رمیش نے اس پٹیشن میں کہا تھا کہ محترمہ جے للتا ایک معروف اداکارہ تھی اور انہوںنے فلموں میں کام کرکے کروڑوں روپے کمائے تھے اور وہ پانچ بار ریاست کی وزیر اعلیٰ بھی رہیں۔
وہ غریبوں کے مفادات کے لئے ہمیشہ کام کرتی رہیں اور انہوں نے غریبوں کی فلاح و بہبود کے لئے متعدد اسکیمیں بھی شروع کیں۔ پٹیشن کے مطابق پانچ دسمبر کو ان کا انتقال ہو گیا تھا اور وہ اپنی وصیت کسی کے نام بھی نہیں کر پائیں۔ ان کا کوئی جانشین بھی نہیں تھا۔ اسے دیکھتے ہوئے ان کی تمام منقولہ اور غیرمنقولہ جائیداد کو قومیا کر اسے ریاستی حکومت کے تحت لایا جانا چاہئے اور اس جائیداد سے ہونے والی آمدنی کا استعمال غریبوں کی فلاح و بہبود کے لئے کیا جانا چاہئے۔
عرضی میں عدالت سے یہ گزارش بھی کی گئی کہ اس جائیداد کا منتظم ہائی کورٹ کے کسی ریٹائرڈ جج کو مقرر کیا جانا چاہئے اور اس معاملے میں مرکز اور ریاستی حکومت کو ہدایت دی جانی چاہئے۔ اس معاملے میں جب عدالت میں سماعت ہوئی تو جج اے سیلوم اور جج پیکلائیا راسن نے یہ کہہ کر اسے مسترد کر دیا کہ مفاد عامہ کی عرضی کی آڑ میں ذاتی معاملات کو عدالت کے سامنے نہیں لایا جا سکتا اور اس سلسلے میں سپریم کورٹ نے کچھ خاص ہدایات دے رکھی ہیں۔ موجودہ عرضی ان کے دائرے اختیار میں نہیں آتی اور اسے خارج کیا جاتا ہے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Madras hc dismisses pil for nationalisation of jayalalithaas assets in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply