ماہِ محرم کے فضائل پر دارالعلوم اسراریہ سنتوشپورمیں جلسے سے صابر القادری اور مولانا نوشیر کا خطاب

کولکاتہ: اسلام میں ماہِ محرم الحرام کی بڑی فضیلت ہے،اس کی ایک ظاہری وجہ تویہ ہے کہ ےہ اسلامی کلینڈرکا پہلا مہینہ ہے،مگرساتھ ہی اسلام سے قبل اس مہینے میں چندایسے اہم واقعات رونما ہوئے ہیں اور پھر اسلام کی آمدکے بعدقرنِ اول میں بعض ایسے واقعات پیش آئے،جنھوںنے اس مہینے کو یادگار بنادیا ہے۔ان خیالات کا اظہارسبن مسجد کے امام علامہ صابرالقادری نے دارالعلوم اسراریہ ،فقیر پاڑہ،جولہ سنتوشپور کولکاتہ میں ماہ محرم الحرام کی فضیلت واہمیت پرمنعقدہ ایک پروگرام میں خطاب کرتے ہوئے کیا۔مدرسہ کے مہتمم مولانانوشیراحمد نے کہاکہ یہ مہینہ اس لیے بھی یادگارہے کہ اسی ماہ کی دس تاریخ کو کربلا کا انتہائی تکلیف دہ اور افسوسناک واقعہ وقوع پذیر ہوا ، جس میں نواسئہ رسول ﷺ اور متعدد اہلِ بیت شہید کر دیے گئے اور انتہائے ستم ےہ کہ آلِ رسولﷺ پر ستم ڈھانے والے بھی وہ لوگ تھے، جواسلام کا کلمہ پڑھنے والے تھے۔انہوں نے کہاکہ کربلا کا واقعہ ہمیں یہ پیغام دیتا ہے کہ ناحق کے سامنے ڈٹ جانا چاہیے اور حق و صداقت کے تحفظ کے لیے اگر اپنے جان و مال کو قربان کرنے کی بھی نوبت آجائے تو اس سے پیچھے نہیں ہٹناچاہیے۔مسجدابراہیم گلبرگہ کے امام و خطیب مولانا عبدالمقتدر الیاس قاسمی نے صدارتی خطاب میں یومِ عاشورہ کے روزے کی اہمیت اور اس کی تاریخ بیان کرتے ہوئے کہاکہ جب آپﷺنے دیکھاکہ اس مہینے کی دس تاریخ کوچوںکہ حضرت موسی ؑاور ان کی قوم کو فرعون کے مظالم سے نجات ملی تھی ،اس لیے اس کی یادمیںیہودی اس دن کا روزہ رکھتے ہیں،توآپنے فرمایاکہ ہم حضرت موسیؑ کے ان سے زیادہ حق دارہیں،لہذا آپ نے بھی مسلمانوں کو اس دن کا روزہ رکھنے کی تلقین فرمائی،مگرساتھ ہی ان کی مشابہت سے بچنے کے لیے آپ نے ےہ بھی فرمایاکہ وہ لوگ اگر ایک دن کا روزہ رکھتے ہیں،توہم دو دن کا روزہ رکھیںاور مسلمانوں کونواور دس یا دس اور گیارہ محرم الحرام کے دوروزے رکھنے کا حکم دیاگیا،آپنے اس روزے کی بہت زیادہ اہمیت وفضیلت بیان فرمائی ہے۔جامعة الشیخ یونس ممبئی کے مہتمم مولانا عبدالکریم نے بھی ماہ محرم الحرام کی عظمت و فضیلت پر روشنی ڈالی ۔انہوں نے کہاکہ آج ہم سب کے لیے ضروری ہے کہ اپنی زندگی کو اسلام کے سانچے میں ڈھالیں اور اپنے اندر حضرت حسینؓ جیسی ایمانی قوت پیدا کریں۔مولانانظام الدین نے کہاکہ کربلاکا واقعہ ہمیں یہ درس دیتا ہے کہ سچائی اور انصاف کی سربلندی کے لیے ہمیں ہر قسم کی قربانی کے لیے تیار رہنا چاہئے۔مولانامنیرالدین نے کہاکہ ہمیں اس مہینے میں خرافات اور غیر اسلامی رسوم میں مشغول ہونے کے بجائے واقعہ¿ کربلا کے اصل پیغام کو سمجھنا اوراس پر عمل کرنا چاہیے کیوںکہ اسی میں ہماری دین و دنیاکی کامیابی ہے۔واضح رہے کہ اس موقع پر مدرسے میں مسابقہ¿ حفظ و قرائت کا بھی انعقاد عمل میں آیاجس میں طلباءنے عمدہ کارکردگی کا مظاہرہ کیا۔ پروگرام کے خصوصی شرکاءمیں خضر پور مسجد اسماعیل کے امام مفتی تبارک،ٹیپوسلطان مسجد ٹالی گنج کے امام مولانا ثاقب انور،تیلنی پاڑہ مسجد کے امام مفتی ابوشحمہ،عالیہ یونیورسٹی کے پروفیسر ڈاکٹر محمد مستقیم ،اے ایم اولڈبوائزایسوسی ایشن کے جنرل سکریٹری انجینئر وقاراحمد،مٹیابرج کے حاجی غیاث احمد،مودی آلی کے حافظ دانش انصاری ،قاری عبدالقادر بھاگلپوری ،قاری منصاراحمد ،قاری حسن دیناجپوری ،مولانا قاری شریف ،قاری مولانا محمد علی ارریاوی،قاری مولانافیروزسیتامڑھی،مفتی ہارون سہرساوی اور بڑی تعداد میں سامعین موجود رہے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Madarsa darululoom asraria santoshpore kolkata commemorates ashura on muharram 10 in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News
What do you think? Write Your Comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.